ڈرگ ایکٹ میں ترمیم ، ادویہ ساز کمپنیوں نے احتجاجی تحریک کا اعلان

ڈرگ ایکٹ میں ترمیم ، ادویہ ساز کمپنیوں نے احتجاجی تحریک کا اعلان

لاہور( جنرل رپورٹر) محکمہ صحت کے ترمیمی ڈرگ ایکٹ 2017ء میں سخت سزاؤں اور جرمانو ں کا قانون واپس نہ لینے کے خلاف پی ایم اے کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کر دیا ہے جس کے تحت محکمہ قانون اور صحت کو یکم جولائی کی ڈیڈ لائن دے دی ہے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 31دسمبر تک ترمیم واپس نہ لی گئی تو ادویات ساز کمپنیاں اور اس سے متعلقہ ادارے دھرنے پر چلے جائینگے۔اس کی تصدیق پاکستان فارماسیوٹیکل مینوفیکچرز ایسوسی ایشن کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے چیئرمین حامد رضا نے کر دی ہے۔ حامد رضا نے بتایا کہ اس حوالے سے ایسوسی ایشن اور ایکشن کمیٹی سے وزیر قانون رانا ثناء اللہ اور وزیر صحت خواجہ عمران نذیر کے وعدے وفا نہیں ہو سکے انہوں نے بتایا کہ اس حوالے سے گزشتہ روز پاکستان فارما سیوٹیکل مینو فیکچرز ایسوسی ایشن کی جو ائنٹ ایکشن کمیٹی کا ہنگامی اجلاس لاہور میں ہو ا جس کی صدارت پی پی ایم اے کے چےئرمین خواجہ شاہ زیب اکر م اور ( نارتھ) کے چےئر مین انجینئر ایم حسیب خان نے کی۔اجلاس میں تین اہم نکات پر بات ہوئی ۔پنجاب حکومت کی طرف سے فارما کمپنیوں کے خلاف چلائے جانے والے ایس ایم ایس پر اعتراض کیا گیا ۔ یہ مطالبہ کیا گیا کہ اس ایس ایم ایس کو فوری طور پر بند کیا جائے ۔ E&Y انسپکشنز کے حوالے سے پنجا ب حکومت نے انڈسٹری سے کیے گئے معاہدے سے انحراف کیا اور پی ۔پی۔ ایم۔ اے کا فراہم کر دہ خط ایشو کرنے کی بجائے مختلف خط ایشو کیا گیا ۔ اس سلسلے میں یہ فیصلہ ہوا کہ وزیرصحت سے ملکر اس پر احتجاج کیا جائے گا اور معاہدے کے مطابق خط ایشو کر ایا جائے گا۔اجلاس میں سب سے اہم نکتہ پنجاب ڈرگ ایکٹ Amendment-2017 پر تفصیلی گفتگو ہوئی ۔ جس میں کہاگیاکہ 13 فروری 2017 ء ؁ سے اب تک ہونے والے تمام واقعات کو زیر بحث لایا گیا۔کمیٹی کے تمام ارکان نے اس بات پر اتفاق کیا کہ پنجاب حکومت ڈرگ لاء ترمیم 2017کو تبدیل کرنے میں سنجیدہ نہیں ہے ۔ جولائی 2017ء ؁ سے بار ہا وعدے کیے گئے کہ اسمبلی کے اگلے اجلاس میں ترمیم کو پاس کر ا لیا جائے گا لیکن رانا ثناء اﷲ اور خواجہ عمر ان نذیر کے تمام وعد ے غلط ثابت ہوئے ۔ جس کے خلاف تمام فارما سیکٹر زسراپا احتجا ج ہیں ۔اجلا س میں ارشد اعوان چےئرمین پی سی ڈی اے پنجاب نے ٹیلیفون پر خطاب کیا اور کمیٹی کے موقف سے اتفاق کیا۔ تمام ممبران نے مکمل اتفاق رائے سے فیصلہ کیا۔احتجاج اور دھرنے کی کال یکم جنوری 2018 ء ؁ کو دے دی گئی ہے ۔اگر اس تاریخ سے پہلے ہمارے مطالبات پورے نہ ہوئے تو 13 فروری 2017 ء ؁ کی طرح تمام فارما سیکٹرز سراپا احتجاج ہو گااور اپنے مطالبات کی منظوری تک احتجاج اور دھرنا دیں گے۔اجلاس میں پی پی ایم اے کے دیگر عہدیداران ، سلیم اقبال ، شفیق الرحمن، عامررشید ، ذیشان حیدربٹر، خالد منیر ، شفیق عباسی اور حامد رضا نے شرکت کی۔اس حوالے سے پی پی ایم ے کے چیئرمین خواجہ شاہ زیب اکرم سے بات کی گئی تو انہوں نے کہاکہ محکمہ صحت کی وعدہ خلافی کے خلاف پورا پاکستان بند ہوگامیڈیکل سے وابستہ کاروبار بند کریں گے۔

ڈرگ ایکٹ

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...