بھارتی جارحیت کا خطرہ ،ڈوکلام میں چینی فوجی دستے بدستور الرٹ

بھارتی جارحیت کا خطرہ ،ڈوکلام میں چینی فوجی دستے بدستور الرٹ

بیجنگ (آئی این پی ) چین اور بھارت کے درمیان ڈوکلام کے متنازعہ علاقے سے اس سال چینی فوجی دستوں کی واپسی نہیں ہوئی ،1600سے زیادہ چینی دستے سرد موسم کے باوجود اس علاقے میں بدستور موجود ہیں، اس سے قبل نومبر میں چینی فوجی دستے اس علاقے سے واپس چلے جاتے تھے تا ہم گذشتہ سال بھارتی فوجیوں کی طرف سے اس علاقے میں گھس آنے کے باعث چین اپنی فوجی دستے اس علاقے سے واپس نہیں بلائے۔ٹائمز آف انڈیا نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ بھارت بھوٹان اور چینی سرحد سے ملحقہ اس علاقے میں چین اور بھارت کے فوجی دستے ایک دوسرے کے آمنے سامنے موجود ہیں ، دونوں ممالک اس علاقے پر ملکیت کا دعویٰ کرتے ہیں، گذشتہ سال بھارتی فوجی دستے اس علاقے میں گھس آئے تھے جس پر چین نے بھارت سے سخت احتجاج کیا تھا ، بعد ازاں دونوں ممالک کے درمیان مذاکرات کے بعد بھارتی فوجی دستے اس علاقے سے واپس چلے گئے تھے،سردیوں کے موسم میں یہاں سخت سردی پڑتی ہے اور بعض اوقات درجہ حرارت منفی درجے تک گر جاتا ہے جس کے باعث یہاں معمولات زندگی انجام نہیں دیئے جا سکتے چنانچہ چین اپنے فوجی دستے نومبر میں واپس لیا کرتا تھا تا ہم اس سال ایسا نہیں کیا گیا اور چینی فوجی دستے بدستور علاقے میں موجود ہیں اور چینی حکومت نے اپنے فوجی دستوں کیلئے سہولتیں فراہم کرنی ہیں ، اب چینی دستے اس موسم میں بھی علاقے میں گشت کررہے ہیں جبکہ علاقے میں برفباری شروع ہو چکی ہے ۔

بھارتی جارحیت

مزید : علاقائی