حکومت کا فاٹا اصلاحات سے پیچھے ہٹنا سمجھ سے بالاتر : نوید قمر

حکومت کا فاٹا اصلاحات سے پیچھے ہٹنا سمجھ سے بالاتر : نوید قمر

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما نوید قمر کا پارلیمنٹ میں قانون سازی کے دو اہم معاملات فاٹا اصلاحات اور نئی حلقہ بندیوں کے حوالے سے کہنا ہے فاٹا اصلاحات پیپلز پارٹی ہی نہیں بلکہ تمام سیاسی جماعتوں اور فاٹا سے تعلق رکھنے والے اراکین کا عر صہ دراز سے مطالبہ ہے۔ڈان نیوز کے پروگرام ’نیوز وائز‘ میں گفتگو کرتے ہوئے نوید قمر نے کہا حکومت نے فاٹا اصلاحات کا بل پیش کیا جس کی کاپیاں اب تک ہمارے پاس پڑی ہوئی ہیں، لیکن اس کے بعد بل کو حکومت کی جانب سے اچانک غائب کر دینا یہ تاثر دے رہا ہے کہ حکومتی حلقے اس معاملے میں الجھن کا شکار ہیں۔حکومت نے چھ یا آٹھ ماہ کے عرصے میں سب سے مشاورت کے بعد ایک پیکج بنایا جس کا ایک چھوٹا سا حصہ نفاذ کیلئے لایا جا رہا ہے، جس میں سپریم اور ہائی کورٹس کا دائرہ کار فاٹا تک بڑھانا ہے یعنی فاٹا کے عوام کو دیگر پاکستانیوں کی طرح حقوق فراہم کرنا ہے۔حکومت فاٹا اصلاحات سے پیچھے کیوں ہٹ رہی ہے؟ اگر حکومت کے پاس فاٹا کے حوالے سے کوئی بات ہے تو ہم اسے سننے کو تیار ہیں لیکن یہ نہیں ہو سکتا کہ ایک چیز ایک ہاتھ سے دے کر دوسرے ہاتھ سے واپس لے لی جائے۔سینیٹ میں حلقہ بند یو ں کے بل سے متعلق انکاکہنا تھا اگر میری حکومت ہوتی تو میں کیا کرتا؟ کیا حکومت نے یہ ثابت کیا کہ ان کی جانب سے اس معاملے پر مکمل کوشش کی گئی ہے؟ ان کے تمام اراکین اور اتحادی سارے عمل میں موجود رہے ہیں؟ قانون سازی حکومت کا کام ہوتا ہے حزب اختلاف اس میں صرف مدد کرتی ہے، لیکن حکومت کی جانب سے اس معاملے میں کوئی سنجیدگی نظر نہیں آتی۔

نوید قمر

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...