آیوڈین کی کمی بیماریوں کا باعث،آئیوڈین ملا نمک استعمال کیا جائے،ڈاکٹر سعید اختر

آیوڈین کی کمی بیماریوں کا باعث،آئیوڈین ملا نمک استعمال کیا جائے،ڈاکٹر سعید ...

ملتان (سٹاف رپورٹر)بہا ء الدین زکریایونیورسٹی کے انسٹی ٹیوٹ آف فوڈ سائنس اینڈ نیوٹریشن کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر نے کہا ہے کہ آیوڈین کی کمی بہت سی بیماریوں کا باعث (بقیہ نمبر26صفحہ12پر )

بنتی ہے. جن میں ذ ہنی پسماندگی ، جسمانی کمزوری ، ذہانت میں کمی ، غیرتسلی بخش تعلیمی کارکردگی اور گلہڑ کی بیماری بھی ہوسکتی ہے. آیوڈین کی مطلوبہ تعداد حاصل کرنے کا آسان دوست طریقہ آیوڈین ملے نمک کا باقاعدہ استعمال ہے. آیوڈین ملا نمک عام نمک ہی ہے. جس میں ہماری روزانہ غذائی ضرورت کے مطابق آیوڈین شامل کی جاتی ہے. انہوں نے ان خیالات کا اظہار انسٹی ٹیوٹ آ ف فوڈ سائنس اینڈ نیوٹریشن کے زیراہتمام اور پنجاب فوڈ اتھارٹی حکومت پنجاب ، نیوٹریشن انٹرنیشنل پاکستان ، ورلڈ فوڈ پروگرام ، سکیلنگ اپ نیوٹریشن کے تعاون سے منعقدہ سیمینار ’’ آیوڈین کی کمی کو پوراکرنے کے لیے آگاہی میں سو ل سوسائٹی او ر تعلیمی اداروں کا کردار ‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا. اس موقع پر پروفیشنل پروگرام منیجر اپر پنجاب اے جے کے نیوٹریشن انٹرنیشنل پاکستان ڈاکٹر طارق محمود ، پرونیشنل پروگرام منیجر جنوبی پنجاب نیوٹریشن انٹرنیشنل پاکستان احتشام الحق طارق ، فوڈ سیفٹی آفیسر پنجاب فوڈ اتھارٹی ، محمد نواز شریف ایگری کلچر یونیورسٹی کے شعبہ فوڈ سائنس کے چیئرمین پروفیسر ڈ اکٹر عمر فاروق اور دیگر ماہرین خوراک بھی موجود تھے. سیمینار میں سول سوسائٹی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی. سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر طارق محمود نے کہاکہ آیوڈین کی مردوں کی نسبت عورتوں میں زیادہ کمی پائی جاتی ہے. اور حاملہ خواتین میں آیوڈین کی کمی سے زیادہ مسائل پیدا ہوتے ہیں اور دوران حمل بچہ مربھی سکتا ہے. یا معذور پیدا ہوگا ۔ احتشام الحق طارق نے کہاکہ آیوڈین گلے میں موجود غدود کی موزوں کارکردگی کے لیے نہایت ضروری ہے. اگر زیادہ عرصے تک آیوڈین خوراک کے ذریعے جسم کو حاصل نہ ہو تو گلے میں موجود غدود اپنا کام بخوبی انجام نہیں دے سکتے اور اس سے گلہڑ کی بیماری ہوجاتی ہے. سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے پروگرام منیجر نیوٹریشن انٹرنیشنل کوآرڈینیٹر سن Sun ڈاکٹر ارشاد دانش نے کہاکہ ہمیں آیوڈین کی کمی کو پورا کرنے کے لیے عوام میں باقاعدہ آگاہی پیدا کرنے کی ضرورت ہے. اور آیوڈین ملا نمک ایک آسان ذریعہ ہے. جس سے آیوڈین کی کمی کو پورا کیاجاسکتا ہے. حاملہ خواتین میں آیوڈین ملا نمک کے استعمال س پیدا ہونے والے بچے زیادہ صحت مند اور چست ہوتے ہیں ۔ فوڈ سیفٹی آفیسر پنجاب فوڈ اتھارٹی مسٹر مبشر نے کہاکہ حکومت پنجاب باقاعدگی کے ساتھ نمک کی چکیوں کو چیک کررہی ہے. کہ نمک میں آیوڈین کو شامل کیاجارہا ہے. یا نہیں. اور جو چکی مالکان نمک میں آیوڈین شامل نہیں کررہے ان کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے. سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر طارق اسماعیل نے کہاکہ ہمیں آیوڈین ملے نمک کو اپنی روزمرہ کی خوراک کا لازمی جزو بنانا چاہیے. تاکہ ہم اپنی آنے والی نسلوں کو مختلف امراض سے محفوظ رکھ سکیں. سیمینار کے آخر میں شیلڈز اور سرٹیفیکیٹ تقسیم کیے گئے۔

ڈاکٹر سعید اختر

مزید : ملتان صفحہ آخر