یوتھ انٹر پرینور شپ ایجوکیشن پروگرام کے لیے لمز کا خیبر پختونخوا حکومت سے اشتراک

یوتھ انٹر پرینور شپ ایجوکیشن پروگرام کے لیے لمز کا خیبر پختونخوا حکومت سے ...

پشاور(سٹاف رپورٹر) لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز(لمز) کے اسکول آف ایجوکیشن (ایس او ای) اور خیبر پختونخوا حکومت نے وزیر اعلی ہاوس پشاور میں منعقدہ تقریب میں تعلیم اور انٹر پنیور شپ کے فروغ کے لئے اشتراک کا اعلان کیا ہے۔یہ سروس لیول معاہدہ لمزاور کے پی کے حکومت کے درمیان وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ایس سہیل ایچ نقوی اور خیبر پختونخواہ کے ڈائریکٹر جنرل یوتھ امور، اسفندیار خان خٹک کے درمیان قلمبند کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ یہ معاہدہ ڈاکٹر نقوی اور ڈائریکٹر انسٹی ٹیوٹ آف مینجمینٹ سائنسز ڈاکٹر محمد محسن خان کے درمیان بھی طے پایا ہے حکومت خیبر پختونخوا کے اس اہم اشتراک کا مقصد خیبر پختونخوا کے دیہی نوجوانوں کی مہارت ، جذبے اور عز م کو فروغ دینا اورمعاشی شعبے میں روزگار ڈھونڈنے کے بجائے روزگار فراہم کرنے والا بنانا ہے۔اس پروگرام کے ذریعے انٹر پرینورزکی شناخت اور ان کی تربیت کی جائے گی تاکہ وہ اپنے خیالات کو قابل اطمینان اور پائیدار کاروباری اداروں میں تبدیل کرسکیں۔ اس پروگرام کے تحت حکومت خیبر پختونخوا اچھے کاروباری تصورات، منفرد مصنوعات اور سروسز شروع کرنے والوں کو فنڈز فراہم کرے گی۔ اس پروگرام کی تشکیل لمز نے دی ہے جس میں مختلف تربیتی سلسلے براہ راست شامل کئے گئے ہیں۔ اس پروگرام میں کم از کم خیبر پختونخوا کی 7جامعات کو منتخب کیا جائے گا جس میں ان جامعات کو ترجیح دی جائے گی جہاں دیہی کمیو نیٹز کے نوجوان انٹر پرینورز کی رسائی ممکن ہو تاکہ وہ کم از کم دو ٹرینیز یا مبصرین کے ساتھ شمولیت اختیار کرسکیں۔ لمز ان سات جامعات کی نگرانی کرے گی تاکہ انہیں ایک سطح پر لایا جاسکے ۔ لمز ان گروہوں کو خود تیار کرے گی۔ اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے لمز کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ایس سہیل ایچ نقوی نے کہا کہ ہمارے نوجوان ہی ہمارا مستقبل ہیں، ہمیں حکومت خیبر پختونخوا کے ساتھ کام کرنے پر خوشی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم فخر محسوس کررہے ہیں کہ یہ پروگرام نوجوانوں کی معاشی ترقی پر توجہ مرکوز کرے گا۔انہوں نے بتایا کہ لمز صوبے کی تمام جامعات کو فراہم کی جانے والی نگرانی اور اس سے حاصل کئے گئے تنائج کو سب کے سامنے لائے گی تاکہ اس پروگرام کے اثرات میں اضافہ ہوسکے۔ خیبر پختونخوا حکومت نے کے پی آئی سی کے لیے 50کروڑ روپے مختص کیے ہیں، جس میں سے 84فیصد گرانٹس کی صورت میں کامیاب درخواست گرازرں کو براہ راست دیئے جائیں گے، اور 16فیصد لمز ایس او ای کی طرف سے پروگرام کی عمل درامد کے لیے استعمال کئے جائیں گے ۔ اس موقع پر اسفندیار خان خٹک نے کہا کہ لمز کے ساتھ یہ پارٹنر شپ بہت ہی خصوصیت کی حامل ہے ، اس وقت خیبر پختونخوا کے نوجوانوں کے لیے اس سے بہتر کوئی اور پروجیکٹ ہو ہی نہیں سکتا۔ہمار ا بنیادی ٹارگٹ صوبے میں نوجوانوں کو مصروف رکھنا ہے تاکہ وہ خود کو بطور انٹرپرینیورزثابت کرسکیں اور ان نوجوانوں کو واپس بلایا جاسکے جو جو صوبے سے باہر جا کر اپنا کاروبارشروع کرچکے ہیں۔ اصل میں ہم 330 افراد کی بات نہیں کررہے بلکہ اتفاقی طور پر 330خاندانوں اور 50ہزار سے زائد افراد پر ان کے گہرے اثرات مرتب ہوں گے۔ اس اشتراک کے حوالے سے بات کرتے ہوئے لمز اسکول آف ایجوکیشن کی ایسوسی ایٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر مریم چغتائی نے کہاکہ خیبر پختونخوا کے نوجوان بہت باہمت اور وقت سے مطابقت رکھنے والے ہیں لیکن اس کے باوجود معاشی لحاظ سے کمزور اور معاشرتی اعتبار سے ان کے بارے میں رائے درست نہیں ہے انہوں نے کہا لمز اور خیبرپختونخوا کی 7جامعات کے درمیان ہونے والا یہ اشتراک خصوصی طور پر خیبر پختونخوا کے باصلاحیت نوجوانوں کو سامنے لانے کے لئے ڈیزائن کیا گیا ہے تاکہ صوبہ خیبر پختونخوا کی کمیونیٹز میں پختہ صلاحیت پیدا کی جاسکے۔ یہ قانونی اشتراک جس کی قیادت لمز اسکول آف ایجوکیشن (ایس او ای) کررہا ہے اس میں نیشنل انکوبیشن سینٹر (جو پہلے لمز سینٹر آف انٹرپرینورشپ کے نام سے جانا جاتا تھا)بحیثیت تعلیمی شراکت دار شامل ہے۔ انسٹیٹیوٹ آف مینجمنٹ سائنسز( آئی ایم سائنسز) بحیثیت مقامی عمل در آمدی شراکت دار کے طور پر شامل ہے۔ یہ پارٹنر شپ لمز اسکول آف ایجوکیشن کو بھی اس کے بنیادی مقاصد، پالیسی سازی اور عالمی سطح پر دنیا کے غیر اہم خطے کی تعلیمی سطح کے حوالے سے تحقیق میں معاونت فراہم کرے گی۔ اس تقریب میں سیکرٹری کھیل اور سیاحت محمد طارق خان،خیبر پختونخواہ کے وزیر اعلی پرویز خٹک، انسٹیٹیوٹ آف مینجیمنٹ سائنسز کی فیکلٹی ممبر شبانہ گل اور اسسٹنٹ پروفیسر انٹرپنیورشپ ڈاکٹر قاضی وحید شامل تھے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر