یو ایس ایڈ منگلا ڈیم اپ گریڈ یشن پراجیکٹ کے لئے 78ملین ڈالر امداد دے گا

یو ایس ایڈ منگلا ڈیم اپ گریڈ یشن پراجیکٹ کے لئے 78ملین ڈالر امداد دے گا

لاہور ( نیوزرپورٹر)واپڈا اور یو ایس ایڈ کے درمیان منگلا اپ گریڈیشن پراجیکٹ کے لئے 78 ملین ڈالر مالیت کے دوسرے عملدرآمدی خط پر دستخط کئے گئے ۔ دوسرے عملدرآمدی خط کے تحت یو ایس ایڈ کی جانب سے دی جانے والی یہ گرانٹ پراجیکٹ کے پیکیج 5-،6 ،8اور 9 کے مختلف کاموں پر خرچ کی جائے گی ۔ 72 ملین ڈالر کے پہلے عملدرآمدی خط پر واپڈا اور یو ایس ایڈ کے مابین 2014ء میں دستخط ہو چکے ہیں ۔چیئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل (ر) مزمل حسین اور یو ایس ایڈ کے مشن لیڈر جیری بسن نے دستخط کئے ۔ ممبر (پاور) واپڈا بھی اِس موقع پر موجود تھے ۔منگلا ڈیم ریزنگ پراجیکٹ کی تکمیل کے بعد پانی کی اضافی مقدار میسر آنے اور منگلا ہائیڈل پاور سٹیشن میں بجلی پیدا کرنے کے پرانے آلات کو تبدیل کرنے کے لئے منگلا ہائیڈل پاور سٹیشن کی اپ گریڈیشن کے منصوبے پر کام کیاجا رہا ہے ۔ منصوبے کا منظور شدہ پی سی ۔ون 52 ارب 22 کروڑ 40 لاکھ روپے پر مشتمل ہے ۔ یو ایس ایڈ منگلا اپ گریڈیشن پراجیکٹ کے لئے 150 ملین ڈالر بطور گرانٹ اور فرانسیسی مالیتی ادارہ اے ایف ڈی 90 ملین یو رو بطور قرض مہیا کر رہے ہیں جبکہ بقیہ رقم کا انتظام واپڈا قرضوں اور اپنے وسائل کے ذریعے کر رہا ہے ۔منگلا اپ گریڈیشن منصوبے کی تکمیل پر منگلا ہائیڈل پاور سٹیشن کی موجودہ پیداواری صلاحیت ایک ہزار میگاواٹ سے بڑھ کر ایک ہزار 310 میگاواٹ ہو جائے گی ۔ منگلا اپ گریڈیشن پراجیکٹ کو 11 مختلف پیکیجز میں تقسیم کیا گیا ہے ، جن کو مختلف مراحل میں مکمل کیا جائے گا ۔ پراجیکٹ کے تحت ایک وقت میں صرف ایک سرنگ یعنی دو پیداواری یونٹوں کو بند کرکے اِن کی اپ گریڈیشن کی جائی گی ۔ پہلے دو یونٹوں کی اپ گریڈیشن کا کام 2019 ء میں مکمل ہو گا ،جبکہ تمام 10 پیداواری یونٹوں کی اپ گریڈیشن 2024 ء تک مکمل ہو جائے گی ۔ یہ امر قابلِ ذکر ہے کہ واپڈا پن بجلی کے وسائل کو بھر پور طور پر استعمال میں لانے کے لئے دو جہتی حکمتِ عملی پر گامزن ہے ، جس کے تحت ملک میں پن بجلی کے نئے منصوبے تعمیرکئے جارہے ہیں اور ساتھ ہی موجودہ ہائیڈل پاور سٹیشنوں کی بحالی اور اپ گریڈیشن بھی کی جارہی ہے، تاکہ بجلی کے قومی نظام میں ماحول دوست اور کم لاگت پن بجلی کے تناسب میں اضافہ کیا جاسکے ۔

مزید : کامرس