جواجوں نے دشمن کیلئے کوئی مورچہ خالی نہیں چھوڑ ا، کمانڈنٹ ایف سی

جواجوں نے دشمن کیلئے کوئی مورچہ خالی نہیں چھوڑ ا، کمانڈنٹ ایف سی

  



بنوں (بیورورپورٹ)کمانڈنٹ فرنٹیئر کانسٹیبلری خیبر پختونخوا معظم جاہ انصاری نے کہا ہے کہ پاکستان میں قیام امن کیلئے ایف سی کے جوانوں نے لازوال قربانیاں دی ہیں جسکی معترف افواج پاکستان بھی ہے اور حکومت پاکستان بھی ہے نامساعد حالات میں ایف سی کے جوانوں نے دشمن کیلئے کوئی مورچہ حالی نہیں چھوڑا بلکہ ہر قسم کے حالات کا ڈٹ کر اور جوانمردی سے مقابلہ کیا جس پر پوری قوم کو فخرہے اور آئندہ بھی ایف سی کے جوان ملک وقوم کیلئے کسی بھی قسم کی قربانی دینے سے دریغ نہیں کریں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دورہ بنوں کے موقع پراخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ ہمارے دورے کا مقصد ایف سی جوانوں سے ملاقات،انکے مسائل اور ضروریات معلوم کرنا،دور دراز علاقوں میں پوسٹوں کا دورہ کرنا اور انکی ضروریات پوری کرنے کیلئے لائحہ عمل تیار کرنے کے ساتھ ساتھ جوانوں کا خوصلہ بڑھانا اور انکے پیشہ ورانہ صلاحیتوں میں اضافہ کرنا ہے انہوں نے کہا کہ ہمارے لئے یہ خوشی کی بات ہے کہ ایف سی فورس ایک ڈسپلن فور کے طور پر جانی جاتی ہے اور بنوں میں 1913سے ایف سی کے جوان خدمات انجام دے رہے ہیں لیکن ان106سالوں میں بنوں کے عوام نے ایف سی جوانوں کی جانب سے کبھی بھی زیادتی،طریقہ کار یا طرز عمل سے کوئی شکایت نہیں کی ہے اور عوام کو ایف سی پر اعتماد ہمارے لئے باعث فخر ہے انہوں نے کہا کہ ملک کی سلامتی،عوام کی حفاظت اور بنوں کے امن وترقی کیلئے ایف سی کے جوان ہمہ وقت تیار ہیں اور ہر قسم کی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں اور امن کیلئے ایف سی کے جوان اپنے نعرے کے مطابق دریاؤں میں،پہاڑوں پر دور اور نزدیک لڑنے کیلئے تیار ہیں۔انہوں نے ڈسٹرکٹ ایف سی آفیسر بنوں میروالی خان کو ہدایت کی کہ وہ ایف سی لائن میں سپورٹس گالا کا انعقاد کریں جسمیں ایف سی کی ٹیموں کے علاوہ مقامی ٹیموں کو بھی شامل کیا جائے جس کیلئے ایک لاکھ روپے نقد کا اعلان کرتا ہوں،قبل ازیں کمانڈنٹ ایف سی خیبر پختونخوا معظم جاہ انصاری نے یادگار شہداء پر سلامی دی،پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی،ایف سی جوانوں نے انہیں سلامی دی جبکہ انہوں نے ایف سی لائن بنوں میں مسجد،جے سی او رومز کی تعمیر نو کا افتتاح کرنے کے علاوہ ایف سی لائن میں پودا لگایا اور ایف سی لائن کو دورہ بھی کیا۔جبکہ ایف سی دربار سے بھی خطاب کیا۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر