40 ہزار پی ٹی سی ایل پنشنرز ظلم کا شکار ہیں،اکرام اللہ

40 ہزار پی ٹی سی ایل پنشنرز ظلم کا شکار ہیں،اکرام اللہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)آل پاکستان پی ٹی سی ایل پنشنرز ٹرسٹ رجسٹرڈ کے چیئرمین اکرام اللہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ3ہزار کے لگ بھگ پنشنرز اور پنشنرز بیوائیں اپنے حق کے حصول کا انتظار کرکے اس دُنیا سے رخصت ہو چکے ہیں لیکن ٹی سی ایل والے اس فیصلے پر عمل درآمد کرنے کی بجائے دوبارہ عدالت عظمیٰ میں 12(2)کابے بنیاد مقدمہ دائر کرچکے ہیں۔جو کہ ایک قابل افسوس با ت ہے۔ آل پاکستان پی ٹی سی ایل پنشنرز ٹرسٹ رجسٹرڈ کے چیئرمین اکرام اللہ نے کہا ہے کہ محکمہ ٹیلی گراف اور ٹیلی فون کے چالیس ہزار پنشنرز بشمول 12ہزار پنشنرز بیوائیں پی ٹی سی ایل کے ظلم کے شکار ہیں۔اور عرصہ 10سال سے حکومت پاکستان کے بجٹ میں اعلان کردہ پنشن اضافہ جات اور دیگر مراعات سے محروم ہیں۔عدالت عظمیٰ کا 12جون 2015؁ء کو ٹی اینڈ ٹی پنشنرز کے حق میں ایک تاریخی فیصلہ بھی آچکا ہے لیکن پی ٹی سی ایل والے اس فیصلے پر عمل درآمد کرنے کی بجائے دوبارہ عدالت عظمیٰ میں 12(2)کابے بنیاد مقدمہ دائر چکے ہے۔اور اس 12(2)مقدمے کا سہارا لے کر پی ٹی سی ایل 12جون 2015؁ء کے فیصلے پر عمل درآمد کرنے سے چشم پوشی کر رہے ہیں۔3ہزار کے لگ بھگ پنشنرز اور پنشنرز بیوائیں اپنے حق کے حصول کا انتظار کرکے اس دُنیا سے رخصت ہو چکے ہیں۔عدالت عظمیٰ کا فیصلہ ابھی تک نہ معطل ہے اور نہ ہی Stayہے۔ہم چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان جناب سعید خان کھوسہ صاحب سے درمندانہ اپیل کرتے ہیں کہ ٹی اینڈ ٹی کے غریب پنشنرز جو کہ اس ملک کے معزز شہری ہیں کے کیس کو انسانی ہمدردی تحت سننے اور پی ٹی سی ایل کے ظالم ادارے سے چالیس ہزار پنشنرز اور اُن سے وابستہ تین چار لاکھ خاندان کو فاقہ کشی سے بچاتے ہوئے ان کو پی ٹی سی ایل سے اپنا حق دلوادیں

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...