آسام میں کرفیو کے دوران مظاہرے، فائرنگ، 3ہلاک 

      آسام میں کرفیو کے دوران مظاہرے، فائرنگ، 3ہلاک 

  



 نئی دلی(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) بھارتی شہریت ترمیمی  بل کے خلاف مشتعل مظاہروں کو بزور طاقت روکنے کیلئے آسام میں کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے اور انٹر نیٹ سروس بھی معطل کر دی گئی ہے۔آسام کے گورنر اور اعلیٰ سیاسی رہنماؤں نے مظاہرین سے پر امن رہنے کی اپیل کی ہے۔پولیس نے بھارتی ترمیمی بل کیخلاف مظاہرہ کرنیوالوں پر سیدھی فائرنگ کی جس کے نتیجے 3 افراد ہلاک ہو گئے جبکہ درجنوں زخمی ہوئے ہیں جنہیں ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ بھارتی پارلیمان سے منظور شہریت ترمیمی بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔انڈین میڈیا رپورٹس کے مطابق سیاسی جماعت انڈین یونین مسلم لیگ نے تارکین وطن کو بھارتی شہریت دینے کے متنازع بل کیخلاف درخواست سپریم کورٹ میں دائر کردی۔ درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ یہ بل برابری،بنیادی حقوق اور زندہ رہنے کے حق سے متعلق آئین کی شقوں سے متصادم، عدالت فوری طور پر اسے غیر قانونی قرار دیبھارت کی عدالت عظمیٰ نے بابری مسجد کیس پر فیصلہ کیخلاف نظر ثانی کی 19 اپیلوں کو مستردکرتے ہوئے خارج کر دیا،چیف جسٹس آف انڈیا کی سربراہی میں 5 رکنی بنچ نے چیف جسٹس کے چیمبر میں اپیلوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے انہیں خارج قرار دیا۔یہ اپیلیں آل انڈیا پرسنل لاء بورڈ اور 40 مختلف سماجی تنظیموں کی جانب سے دائر کی گئی تھیں۔بنچ نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ اپیل کنددگان متاثرہ فریق ثابت نہیں ہوتے اسلئے اپیلیں خارج قرار دی جاتی ہیں۔ 

آسام ہنگامے

مزید : صفحہ آخر


loading...