مانگٹا نوالہ، بھائی کے ہاتھوں قتل ہونیوالی خاتون کی بھتیجی باز یاب، شلٹر ہوم منتقل

مانگٹا نوالہ، بھائی کے ہاتھوں قتل ہونیوالی خاتون کی بھتیجی باز یاب، شلٹر ...

  



لاہور(کرائم رپورٹر) آئی جی پنجاب شعیب دستگیر کے احکامات پرپنجاب پولیس کے بلاتاخیر اور فوری ایکشن کی بدولت ضلع ننکانہ میں حو اکی بیٹی غیرت کے نام پر قتل ہونے سے بچ گئی۔لاپتہ لڑکی عائشہ بی بی کو گاؤں سے برآمد کرکے پولیس نے عدالت کے ذریعے شیلٹر ہوم منتقل کردیا۔ تفصیلات کے مطابق ننکانہ کے علاقہ مانگٹانوالہ کے گاؤں پیپل والہ میں نودسمبر کو ملزم علی رضانے فائرنگ کرکے اپنی بہن ثمینہ بی بی کو قتل کردیا تھا جس کے تناظر میں ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے آئی جی پنجاب اورپنجاب پولیس کے ہیومن رائٹس سیل کو مراسلہ بھجوایا جس میں مقتولہ کی بھتیجی عائشہ بی بی کی جان بچانے کیلئے بروقت اقدامات کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔درخواست میں یہ بتایا گیا تھا کہ عائشہ گذشتہ کئی دنوں سے لاپتہ ہے اور ہمسایوں کے مطابق اسے بھی قتل کر دئیے جانے کا شبہ ہے۔ہیومن رائٹس کمیشن کے خط اور آئی جی پنجاب کی ہدایات پر اے آئی جی ہیومن رائٹس سیل، سنٹرل پولیس آفس،سیف المرتضی نے فوری طور پر ڈی پی او ننکانہ اسماعیل کھاڑک کونہ صرف فوری ایکشن کے لیے مراسلہ بھجوایا بلکہ ٹیلی فون پر عائشہ بی بی کی بحفاظت بازیابی کیلئے فوری اقدامات کے لیے بھی کہاجس پرپولیس نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے لڑکی کو گاؤں سے ہی برآمد کرکے مجسٹریٹ فرسٹ کلاس ننکانہ صاحب کی عدالت میں پیش کیاجہاں لڑکی کا بیان ریکارڈ کیا گیا اوراس کی درخواست پر اسے شیلٹر ہوم منتقل کردیا۔پولیس ٹیم نے فوری ایکشن لیتے ہوئے ثمینہ بی بی کے قاتل علی رضا کو گرفتار کرنے کے علاو ہ اس کے قبضے سے آلہ قتل برآمد کیااور مقتولہ ثمینہ کی بھتیجی عائشہ بی بی جسے قتل کرنے کی پلاننگ کی جارہی تھی۔کی جان کو بھی بچا لیا۔ ملزم کے خلاف قانون کے مطابق سخت کاروائی عمل میں لائی جارہی ہے۔

جبکہ پولیس ٹیمیں واقعہ میں ملوث دیگر ملزمان کی گرفتاری کیلئے کاروائیوں میں مصروف ہیں۔

مزید : علاقائی