سانحہ تیز گام، 8ڈیڈ باڈیز لاپتہ: ریلوریزحکام، بوگیو ں میں راکھ کا ڈی این اے کروائیں: قائمہ کمیٹی 

    سانحہ تیز گام، 8ڈیڈ باڈیز لاپتہ: ریلوریزحکام، بوگیو ں میں راکھ کا ڈی این ...

  



اسلام آباد(آئی این پی)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے میں انکشاف ہوا ہے کہ سانحہ تیزگام میں جاں بحق ہونے والے آٹھ افراد کی ڈیڈ باڈیز لاپتہ ہیں،ریلوے حکام نے کمیٹی کو بتایا ہے کہ دو ڈیڈ باڈیز کی لواحقین نہ ملنے کے باعث امانتا تدفین کر دی گئی ہے، آگ لگنے سے کچھ باڈیز راکھ میں بھی تبدیل ہو جاتی ہیں، کمیٹی نے متاثرہ بوگیوں میں موجود راکھ کے ڈی این اے چیک کروانے کی ہدایت کر دی،چیئرمین کمیٹی نے کہاکہ متاثرہ بوگیوں کو بالکل بھی نہ چھیڑا جائے، جبکہ لاپتہ باڈیز کی فہرست کے حوالے سے لوکل پولیس سے بھی تحقیقات کرائی جائے۔جمعرات کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے کا اجلاس چیئرمین سینیٹر محمد اسد علی خان جونیجو کی صدارت میں ہوا،اجلاس کے دوران رکن کمیٹی سینیٹر مرزا محمد آفریدی نے کہا کہ ریلوے کا کارگو جتنا زیادہ ہو گا اتنا سڑکیں بنانے کے خرچے کم ہوں گے، ریلوے اسٹیشنوں پر اشتہارات کی برینڈنگ کی جائے جس سے ریلوے کو بہت منافع ہو سکتا ہے،رکن کمیٹی سینیٹر جہانزیب جمالدینی نے کہا کہ کوئٹہ تفتان ریلوے سیکشن پر کوئی خاص کام نہیں کیا گیا، اس کی بہتری جتنی زیادہ ہو سکتی ہے کی جائے، ایران سے ترکی تک وہ اپنا ریلوے ٹریک بنا چکے ہیں، بارڈر سے جو بھی گڈز آتی ہیں وہ ٹرین سے آنی چا ہئیں،ریلوے حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ کوئٹہ تفتان سیکشن ہمارا مستقبل ہے، چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ آئندہ اجلاس میں کوئٹہ تفتان سیکشن کی بہتری کے حوالے سے بریفنگ دی جائے،سیکرٹری ریلوے نے کمیٹی کو بتایا کہ ریلوے سے جو آمدن ہوتی ہے اس سے تنخواہیں اور پیشن نہیں دے سکتے۔

سانحہ تیز گام 

مزید : صفحہ آخر


loading...