وکلاء نے ہسپتال پر نہیں انسانیت پر حملہ کیا‘ پائنیریونٹی

وکلاء نے ہسپتال پر نہیں انسانیت پر حملہ کیا‘ پائنیریونٹی

  



ملتان (وقائع نگار) پائنیئر یونٹی کے عہدیداروں نے گزشتہ روز لاہور میں پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی ہسپتال کے اندر وکلاء کی جانب سے ڈاکٹروں پر تشدد اور ہسپتال کی توڑ پھوڑ کی مکمل مذمت کی ہے۔انہوں نے اس عمل کو غیر قانونی اور غیر آئینی قرار دیا یے۔نشتر ہسپتال کے شعبہ گائنی کے سربراہ پروفیسر اور پائنیئر یونٹی کے صدر ڈاکٹر شاہد راو نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی لاہور میں ہونے والے واقعہ پر اپنے تاثرات بیان کرتے ہوئے بتایا کہ وکلاء کی جانب سے زیر علاج مریضوں۔(بقیہ نمبر55صفحہ12پر)

لواحقین۔ ڈاکٹروں پر حملہ اور ہسپتال کی توڑ پھوڑ کا عمل غیر قانونی ہے۔جسکی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔ڈاکٹر ایک مہذب پیشہ ہے۔جو مسیحاؤں کا بھر پور کردار ادا کرتے ہیں۔روزانہ لاکھوں مریضوں کو صحت مند زندگی گزارنے میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔کیونکہ ڈاکٹر انکو مختلف بیماریوں سے چھٹکارہ دلاتے ہیں۔اس موقع پر ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر آفتاب شاہ نے کہا کہ گزشتہ روز کا واقعہ پولیس اور حکومت کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ھے۔ڈاکٹر علاج کرنے کے باوجود تنقید اور تشدد کا نشانے بنتے جارہے ہیں۔جو اب ناقابل برادشت ہوگیا ہے۔داجٹر ساجد اختر کا کہنا ہے کہ حکومت کی روایتی سستی اور نا اہلی کی وجہ سے تاحال پنجاب کے ہسپتالوں کی سیکیورٹی کا بل مہینوں سے تیار ھے مگر ابھی تک منظوری کا منتظر ھے۔اسسٹنٹ پروفسیر ڈاکٹر نصرت بزدار نے کہا ہے کہ یہ حملہ ھسپتال پر نہیں انسانیت پر کیا گیا ھے، حملہ کرنے والے شر پسند انسان کہلانے کے بھی حقدار نہیں۔دل کے مریض جو زندگی موت کی لڑائی لڑ رھے ھوتے ہیں انکا خیال بھی نہیں آیا۔جسکی وجہ سے اتنی اموات ہوئیں ہیں۔ حکومت وقت جلد از جلد ھسپتالوں کی سیکیورٹی کا بل منظور کرایا جائے۔ورنہ آئے روز اس طرح کے کوئی نہ کوئی وقعت جنم لیتے رہیں گے۔

پائینر یونٹی

مزید : ملتان صفحہ آخر