بھارتی شہریت بل سپریم کورٹ میں چیلنج ، آسام میں مظاہرے ، فوج طلب

بھارتی شہریت بل سپریم کورٹ میں چیلنج ، آسام میں مظاہرے ، فوج طلب

  



نئی دلی(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) بھارت کی عدالت عظمیٰ نے بابری مسجد کیس پر فیصلہ کیخلاف نظر ثانی کی 19 اپیلوں کو مستردکرتے ہوئے خارج کر دیا،چیف جسٹس آف انڈیا کی سربراہی میں 5 رکنی بنچ نے چیف جسٹس کے چیمبر میں اپیلوں پر نظر ثانی کرتے ہوئے انہیں خارج قرار دیا ۔ یہ اپیلیں آل انڈیا پرسنل لاء بورڈ اور 40 مختلف سماجی تنظیموں کی جانب سے دائر کی گئی تھیں ۔ بنچ نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ اپیل کنددگان متاثرہ فریق ثابت نہیں ہوتے(بقیہ نمبر13صفحہ12پر )

اسلئے اپیلیں خارج قرار دی جاتی ہیں ۔ دریں اثنا بھارتی پارلیمان سے منظور شہریت ترمیمی بل کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا گیا ۔ انڈین میڈیا رپورٹس کے مطابق سیاسی جماعت انڈین یونین مسلم لیگ نے تارکین وطن کو بھارتی شہریت دینے کے متنازع بل کےخلاف درخواست سپریم کورٹ میں دائر کردی ۔ درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ یہ بل برابری،بنیادی حقوق اور زندہ رہنے کے حق سے متعلق آئین کی شقوں سے متصادم ، عدالت فوری طور پر اسے غیر قانونی قرار دے ۔ پارلیمان سے منظوری کے بعد متنازع بل پر عملدرآمد کے لیے تمام رکاوٹیں ختم ہوگئی ہیں جب کہ بل کے خلاف مشتعل مظاہروں کو بزور طاقت روکنے کیلئے آسام میں فوج طلب کرلی گئی ہے ۔

ترمیمی بل

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...