پاکستان نے غیر منظور شدہ اڈے سے بھارت کیخلاف ایف 16استعمال کئے

      پاکستان نے غیر منظور شدہ اڈے سے بھارت کیخلاف ایف 16استعمال کئے

  



واشنگٹن(اظہر زمان،بیوروچیف) امریکہ نے پاکستان پر مبینہ طور پر الزام لگایا ہے کہ اس نے اگست میں بھارتی فضائیہ کیساتھ ایک مقابلے میں غیر منظور شدہ فوجی اڈے سے امریکی ایف سولہ جنگی طیاروں کا استعمال کیا۔ امریکی جریدے ”یوایس نیوز اینڈ ورلڈ رپورٹ“ کے سربراہ کے نام ایک خط کے حوالے سے یہ خبر نشر کی ہے۔ پاکستانی سفارتی ذرائع نے اسکے ردعمل میں حکومت پاکستان کا سابقہ ردعمل دہرایا ہے کہ ان طیاروں کے ذریعے پڑوسی ممالک کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کر کے جارحانہ کارروائی نہیں کی گئی بلکہ ان طیاروں کو پاکستانی حدود میں حملہ آور بھاری طیاروں کے خلاف دفاع میں استعمال کیا گیا۔ امریکی جریدے نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ فروری میں بھارت اور پاکستان کے درمیان فضائی تصادم ہوا تھا جسکے بارے میں اگست میں وزارت خارجہ کی اعلیٰ خاتون افسر آنڈریا تھامپسن نے پاکستانی فضائیہ کے سربراہ ایئر مارشل مجاہد انور خان کے نام ایک خط میں ان سے ایف سولہ طیاروں کی فروخت کے معاہدے کی خلاف ورزی کی شکایت کی تھی۔ جریدے نے اپنے ایک ذرائع کے حوالے سے یہ خبر نشر کی ہے جس نے اس خط کو دیکھا تھا۔ فضائی تصادم کے بعد مارچ میں امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان خاتون نے تصدیق کی تھی کہ بھارت نے امریکہ کو بتایا ہے کہ پاکستان نے فروری کے تصادم میں ان ایف سولہ طیاروں کا ناجائز استعمال کیا تھا۔ تاہم وزارت خارجہ نے سرکاری طو رپر تصدیق نہیں کی کہ اس نے پاکستان سے شکایت کی تھی۔ ترجمان نے صرف اتنا کہا تھا کہ امریکہ اس کا جائزہ لے رہا ہے۔ 

ایف سولہ 

مزید : صفحہ اول


loading...