سلام اس پر جو آیارحمتہ للعالمینؐ بن کر

سلام اس پر جو آیارحمتہ للعالمینؐ بن کر

  



جگن ناتھ آزاد کا ہدیہ نعت

سلام اسؐ ذات اقدس پر، سلام اس فخر دوراں پر

ہزاروں جسؐ کے احسانات ہیں دنیائے امکاں پر

سلام اسؐ پر جو حامی بن کر آیا غم نصیبوں کا

رہا جو بیکسوں کا آسرا، مشفق غریبوں کا

مدد گار و معاون بے بسوں کا، زیر دستوں کا

ضعیفوں کا سہارا اور محسن حق پرستوں کا

سلام اسؐ پر جو آیا رحمتہ للعالمینؐ بن کر

پیامِ دوست لے کر صادق الوعد و امیں بن کر

سلام اسؐ پر کہ جس کے نور سے پر نور ہے دنیا

سلام اسؐ پر کہ جسؐ کے نطق سے مسحور ہے دنیا

سلام اسؐ پر جلائی شمع عرفان جس نے سینوں میں

کیا حق کے لئے بے تاب سجدوں کو جبینوں میں

سلام اسؐ پر بنایا جسؐ نے دیوانوں کو فرزانہ

مئے حکمت کا چھلکایا جہاں میں جسؐ نے پیمانہ

بڑے چھوٹے میں جسؐ نے اک اخوت کی بنا ڈالی

زمانہ سے تمیز بندہ و آقا مٹا ڈالی

اسلام اسؐ پر فقیری میں نہاں تھی جسؐ کی سلطانی

رہی زیرِ قدم جسؐ کے شکوہ و شانِ خاقانی

سلام اسؐ پر جو ہے آسودہ زیر گنبد خضریٰ

زمانہ اج بھی ہے جسؐ کے در پر ناصیہ فرسا

سلام اسؐ پر کہ جس نے ظلم سہہ سہہ کر دعائیں دیں

وہ جسؐ نے کھائے پتھر، گالیاں، اس پر دعائیں دیں

سلام اس ذاتِ اقدس پر حیات جاودانی کا

سلام آزاد کا، آزاد کی رنگیں بیانی کا

مزید : ایڈیشن 1


loading...