میرے بیٹے کو ایک ناکارہ جہاز میں بیٹھایا گیا، کیپٹن کی والدہ کمرہ عدالت میں رو پڑیں

میرے بیٹے کو ایک ناکارہ جہاز میں بیٹھایا گیا، کیپٹن کی والدہ کمرہ عدالت میں ...
میرے بیٹے کو ایک ناکارہ جہاز میں بیٹھایا گیا، کیپٹن کی والدہ کمرہ عدالت میں رو پڑیں

  



کراچی(ویب ڈیسک) سندھ ہائی کورٹ نے دوران پرواز پی آئی اے کے اے ٹی آر طیاروں کے انجن بند ہونے سے متعلق وفاقی حکومت اور سول ایوی ایشن سے جامع جواب طلب کرلیا۔جسٹس محمد علی مظہر اور جسٹس آغا فیصل پر مشتمل دو رکنی بینچ کے روبرو دوران پرواز پی آئی اے کے اے ٹی آر طیاروں کے انجن بند ہونے سے متعلق سماعت ہوئی۔دوران سماعت شہید کیپٹن احمد منصور جنجوعہ کی والدہ کمرہ عدالت میں رو پڑیں۔روتے ہوئے شہید کیپٹن کی والدہ نے نے کہا کہ میرے بیٹے کو ایک ناکارہ جہاز میں بٹھا گیا، انکوائری کا کچھ پتہ نہیں۔ کوئی نہیں بتا رہا کہ حادثہ کیوں ہوا کون ذمہ دار ہے۔

سب کے پاس گئی مگر کوئی جواب دینے کو تیار نہیں۔پی آئی اے کی 60 سالہ تاریخ میں 55 طیارے حادثات کا شکار ہوچکے ہیں۔اے ٹی آر طیاروں کی پرواز کے دوران انجن بند ہونے کے 20 واقعات ہوچکے ہیں۔ 7 دسمبر 2016 PK-661 بھی انجن بند ہونے کی وجہ سے حادثہ ہوا۔حادثہ میں مذہبی اسکالر جنید جمشید سمیت 47 افراد جاں بحق ہوئے۔ حادثہ ہونے کے بعد انکوائری کی گئی جس کا نتیجہ اب تک نہیں نکلا۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...