کشمیریوں کی جاسوسی کرنے والے بھارتی میاں بیوی کو جرمنی میں سزا دے دی گئی

کشمیریوں کی جاسوسی کرنے والے بھارتی میاں بیوی کو جرمنی میں سزا دے دی گئی
کشمیریوں کی جاسوسی کرنے والے بھارتی میاں بیوی کو جرمنی میں سزا دے دی گئی

  



برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) جرمنی میں کشمیریوں اور سکھوں کی جاسوسی کرنے والے بھارتی میاں بیوی کو سزا سنا دی گئی۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق یہ بھارتی جوڑا Moenchengladbachمیں مقیم تھا جہاں وہ بھارتی خفیہ ایجنسی کے لیے سکھوں اور کشمیریوں کی جاسوسی کرتا رہا۔ جاسوسی کے الزام میں جب انہیں گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا تو انہوں نے اپنے جرم کا اعتراف کر لیا۔

رپورٹ کے مطابق اس شخص کا نام منموہن سنگھ اور اس کی بیوی کا نام کنول جیت کور تھا۔ منموہن کو 18ماہ معطل قید اور کنول جیت کو 180دن قید کی سزا سنائی گئی۔ عدالت میں سامنے آنے والی تفصیلات کے مطابق منموہن کو بھارتی خفیہ ایجنسی را نے 2015ءکے اوائل میں ریکروٹ کیا تھا اور اس کی کشمیری حریت لیڈروں اور سکھوں کی جاسوسی کرنے پر ڈیوٹی لگائی تھی۔ وہ جرمنی کے شہروں کولوجن اور فرینکفرٹ میں واقع سکھ گردواروں میں جاتا اور وہاں کے معاملات را کو بتاتا تھا۔

اس کے علاوہ جہاں کہیں سکھ اور کشمیری کمیونٹی احتجاج کرتے وہاں بھی پہنچ جاتا اور اس کے متعلق تفصیلات را کو پہنچاتا تھا۔ جاسوسی کے عوض اسے را کی طرف سے ماہانہ 200یورو معاوضہ ملتا تھا۔ وہ 2017ءکے بعد سے را کے ایک افسر کے ساتھ باقاعدہ ملاقاتیں بھی کرتا رہا۔ عدالت نے منموہن کو 1500یورو جرمانہ بھی کیا ہے جو فلاحی تنظیم کو دیا جائے گا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...