”یہ ایوارڈ تمہارے لئے ہی بنا ہے، دوسرے امپائرز تو بس حاضری کیلئے تقریب میں آ جاتے ہیں“

”یہ ایوارڈ تمہارے لئے ہی بنا ہے، دوسرے امپائرز تو بس حاضری کیلئے تقریب میں آ ...
”یہ ایوارڈ تمہارے لئے ہی بنا ہے، دوسرے امپائرز تو بس حاضری کیلئے تقریب میں آ جاتے ہیں“

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے مایہ ناز امپائر علیم ڈار اور آسٹریلیا کے سابق امپائر سائمن ٹافل نے درحقیقت بین الاقوامی امپائرنگ کو ایک نئی شکل دی اور دونوں میں دیرینہ دوستی رہی ہے۔

ان سے پہلے بڑی عمر کے امپائرز میدان میں نظر آتے تھے لیکن دونوں کے آنے سے دوسرے نوجوان امپائرز کو بھی حوصلہ ملا اور وہ بھی امپائرنگ میں آنے لگے۔سائمن ٹافل اور علیم ڈار نے ایک ساتھ کئی میچوں میں امپائرنگ کی ہے اور دونوں میں آئی سی سی کے بہترین امپائر کے ایوارڈ کیلئے مقابلہ بھی رہا ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ علیم ڈار نے 2009ءسے 2011ءتک لگاتار تین سال بہترین امپائر کا ایوارڈ حاصل کیا۔ اس سے قبل وہ پانچ بار اس ایوارڈ کیلئے نامزد ہوتے رہے تاہم پانچوں بار قرعہ فال سائمن ٹافل کے نام نکلتا رہا۔

جب ہر سال ایوارڈ کیلئے سائمن ٹافل کا نام پکارا جاتا تو علیم ڈار ان کے ساتھ مذاق کرتے ہوئے کہا کرتے تھے ’سائمن! یہ ایوارڈ تمہارے لئے ہی بنا ہے۔ دوسرے امپائرز تو بس حاضری کیلئے تقریب میں آ جاتے ہیں۔‘

مزید : کھیل


loading...