ڈاکٹر عرفان ، وہ ڈاکٹر جن کی ویڈیو دیکھ کر وکلاءنے پی آئی سی پر حملہ کیا ،اُن کے اپنے والد بھی وکیل نکلے

ڈاکٹر عرفان ، وہ ڈاکٹر جن کی ویڈیو دیکھ کر وکلاءنے پی آئی سی پر حملہ کیا ،اُن ...
ڈاکٹر عرفان ، وہ ڈاکٹر جن کی ویڈیو دیکھ کر وکلاءنے پی آئی سی پر حملہ کیا ،اُن کے اپنے والد بھی وکیل نکلے

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب انسٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلاءحملے کی بنیاد بننے والےگرینڈ ہیلتھ  الائنس پی آئی سی کے چیئرمین رہنما ڈاکٹر عرفان کی تقریر تھی جس میں اس نے وکلاء کے مذاکرات کا مذاق اڑایا تھا تاہم اب ڈاکٹر عرفان نےوکلاء سے معذرت کرتےہوئے کہا ہے کہ میرے  والد اور دو چچا بھی وکیل ہیں اور میں کالے کوٹ کا  بڑا احترام کرتا ہوں،میری اس ویڈیو سے جن کی دل آزاری ہوئی اُن سے معافی مانگتاہوں ۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے  ڈاکٹر محمد عرفان کا کہنا تھا کہ ہماری ڈی آئی جی آفس میں صلح ہو چکی تھی ،پی آئی سی پر حملہ وکلاء کی اندرونی سیاست کا شاخسانہ ہے،مجھےعلم نہیں کہ میری تقریر کی ویڈیو کس نے بنائی اور سوشل میڈیا پر پھیلائی مگر یہ ویڈیو صلح سے پہلے کی ہے جس میں دوستوں اور ساتھیوں سے ہلکے پھلکے انداز میں کی گئی تقریر کو غلط رنگ دے دیا گیا ۔اُنہوں نے کہا کہ میرے والداور دو چچا بھی وکیل ہیں اور وہ کالے کوٹ کا بڑا احترام کرتے ہیں لہذا وہ وکلاء سے معافی مانگتے ہیں تاہم وکلاء کو بھی پی آئی سی پر حملے کی معافی مانگنی چاہئے۔

یاد رہے کہ پی آئی سی میں وکلاء تشدد کے واقعہ کی وجہ مبینہ طور پر ڈاکٹر عرفان کی تقریر بنی جس میں اُس نے وکلاء کے مذاکرات کا مذاق اڑایا۔ڈاکٹر عرفان کا اپنی ویڈیو تقریر میں کہنا تھا کہ ’’وکیل پولیس کے پاس بھی گئے لیکن کچھ نہیں ملا ، ایک وکیل لیڈر پولیس سامنے رو دیا کہ ڈاکٹروں نے بہت مارا ۔ ڈاکٹر عرفان نے شعر بھی پڑھے،ان کی اس تقریر پر وہاں کھڑے  ساتھی ڈاکٹر اور میڈیکل سٹاف ہنستا رہا۔سوشل میڈیا پر ہسپتال میں ڈاکٹرز اور عملے کی وکلاء سے لڑائی کے بعد ڈاکٹر عرفان کی تقریر کی ویڈیو جاری کی گئی تھی جس نے جلتی پر تیل کا کام کیا ، ویڈیو وائرل ہونے پر وکلاء مشتعل ہوگئے جنہوں نے یہ ویڈیو تمام وکلاء کو بجھوائی اور وکلاء اکٹھے ہو کر احتجاج کرتے ہوئے پی آئی سی پہنچے جہاں انتہائی ناخوشگوار سانحہ رونما  ہوا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...