ہندوستان بھر میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف مظاہرے جاری

ہندوستان بھر میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف مظاہرے جاری
ہندوستان بھر میں شہریت ترمیمی بل کے خلاف مظاہرے جاری

  



نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن)ہندوستان میں شہریت ترمیمی بل کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے منظوری ملنے کے باوجود بل کے خلاف مختلف علاقوں میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔

ہندوستانی  میڈیا رپورٹس کے مطابق شہریت ترمیمی بل کے خلاف ہندوستان کی شمال مشرقی  ریاستوں سے شروع ہونے پرتشدد مظاہروں کا سلسلہ اب دیگر ریاستوں میں بھی پھیل گیا ہے۔شمال مشرقی ریاستوں میں ہونے والے پرتشدد مظاہروں کے باعث ہندوستانی وزیرداخلہ ا میت شاہ کو اپنا شیلانگ دورہ منسوخ کرنا پڑ گیا ہے۔ امیت شاہ کو سیکیورٹی کی صورت حال خاص طور سے آسام کی صورت حال کے پیش نظر اپنا دورہ منسوخ کرنا پڑا ہے ۔دریں اثنا ہندوستان کی ریاست اترپردیش اور بہار سے بھی شہریت ترمیمی بل کی مخالفت میں مظاہروں کی خبریں موصول ہوئی ہیں ۔اطلاعات کے مطابق یوپی اور بہار کے مختلف شہروں کے عوام سڑکوں پر نکل آئے اور اس بل کی مخالفت میں نعرے لگائے۔دوسری جانب ہندوستان کی مودی سرکار نےبعض ریاستوں کی جانب سے شہریت ترمیمی بل کو نافذ کرنے سے انکار کے اعلان کے بعد کہا ہے کہ ریاستی حکومتوں کو اس بل کو نافذ کرنے سے انکار کا حق نہیں ہے۔مودی حکومت کا یہ بیان ایسی حالت میں آیا ہے کہ جب مغربی بنگال ، پنجاب ، مدھیہ پردیش ، پنجاب ، کیرل اور چھتیس گڑھ کے وزرائے اعلی نے اعلان کیا کہ اس بل سے اِن کا کوئی تعلق نہیں ہے اور وہ اسے نافذ نہیں کریں گے ۔

مزید : بین الاقوامی