کشمیریوں کو مذاکرات میں شامل کیا جائے، سعودی کالمسٹ وستارہ امتیازخالد المعیا

کشمیریوں کو مذاکرات میں شامل کیا جائے، سعودی کالمسٹ وستارہ امتیازخالد ...
کشمیریوں کو مذاکرات میں شامل کیا جائے، سعودی کالمسٹ وستارہ امتیازخالد المعیا

  

 جدہ (محمد اکرم اسد) ورلڈ مسلم کانگریس کے صدر و ہلال پاکستان حاصل کرنے والے ڈاکٹر عبداللہ عمر نصیف نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کو مسئلہ کشمیر حل کرنے کیلئے اقوام متحدہ کی منظور کردہ قرار دادوں کے مطابق بات چیت کرنی چاہیے۔ پرامن مذاکرات بات چیت نہ صرف ان کو حق دلائیں گے بلکہ یہ علاقے میں امن کے قیام کے لئے بھی ضروری ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں پی آر سی کی طرف سے یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے منعقدہ مجلس مذاکرہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ممتاز سعودی کالمسٹ تھنکر اور ستارہ امتیاز حاصل کرنے والے جرنلسٹ خالد المعیا نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ امید تھی کہ اقوام متحدہ 65 سال گزرجانے پر بھی کشمیر میں حق خود ارادیت کا حق دار دیتی جیسا کہ انہوں نے جلدی میں الیٹ شیمور اور سوڈان میں کروایا تھا مگر وہ کشمیر اور فلسطین کو یہ حق دلانے میں ناکام رہی۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس آئیڈیا کی بھی حمایت کرتے ہیں کہ کشمیریوں کو بھی مذاکرات میں شامل کیا جائے۔سابق سفیر و فلاسفر ڈاکٹر علی الغامدی نے اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دو قومی نظریہ جس کے مطابق پاکستان ایک مسلم ملک بنا تھا تو کشمیر اس کا حصہ ہونا چاہیے تھا کیونکہ کشمیر میں مسلمانوں کی اکثریت تھی۔ پاکستان اور بھارت کشمیر کے مسئلہ پر تین جنگیں لڑ چکے ہیں مگر اس کو حل کرنے میں ناکام رہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت اقوام متحدہ کی 1948ء میں حق خود ارادیت دینے کی قرار داد کو مان چکا ہے۔ اس لئے چاہیے کہ کشمیر میں حق خود ارادیت کرادے، ڈاکٹر علی الغامدی نے کہا کہ کشمیر کے پرامن حل کے لئے او آئی سی کو چاہیے کہ دونوں ممالک کے درمیان مذاکرت میں مدد کرے۔ دوسرے خطاب کرنے والوں جن میں شاہد نعیم، انجینئر عزیز احمد، طیب موسانی، سید غضنفر حسین، سید نصیر الدین، سید فضل اور الطف شمس نے بھی کشمیریوں کو حق خود ارادیت دینے کی حمایت کرتے ہوئے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ بھارت کو مجبور کرے کہ کشمیریوں کو ان کا حق دیا جائے۔ محمد امانت اللہ اور شیخ لقمان نے پی آر سی کو مذاکرہ منعقد کرنے پر مبارکباد دی جبکہ حامد اسلام نے پی آر سی کے کشمیر اور مشرقی پاکستان میں رہ جانے والوں پر پی آر سی کی پالیسی پر روشنی ڈالی، پی آر سی کے کنوینر انجینئر سید احسان الحق نے مہمان گرامی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ او آئی سی کو بھی کشمیر کے مسئلہ کے حل کے لئے اپنا کردار ادا کرے۔ عبدالمجید نے تلاوت کلام پاک جبکہ سیکرٹری جنرل عبدالقیوم واسق نے مذاکرہ کی نظامت کی جبکہ شعراء سید محسن علوی، واثق، زمرد خان سیفی نے نعتیہ اور کشمیر پر اپنا اپنا کلام سنایا۔

مزید : عالمی منظر