بورڈ آف ریونیو کا اشٹام پیپرز کی قیمتوں میں اضافے کو نوٹیفیکیشن نظر انداز

بورڈ آف ریونیو کا اشٹام پیپرز کی قیمتوں میں اضافے کو نوٹیفیکیشن نظر انداز

لاہور(عامر بٹ سے )بور ڈ آف ریونیو کی جانب سے اشٹام پیپرز کی قیمتوں کے اضافہ کے حوالے سے جاری کیا جانے والا نوٹیفیکیشن اشٹام سیلرز نے دفن کر دیا صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب بھر کے ضلع میں تعینات ڈسٹرکٹ کلکٹر صاحبان کی عدم توجہ،لاپرواہی اور مبینہ غفلت کے باعث اشٹام سیلرز سابقہ روٹین کے مطابق کاروبار چلانے لگے حکومتی خزانے میں زیادہ سے زیادہ ریونیو جمع کرنے کی حکمت عملی بھی دھری کی دھری رہ گئی ضلع قصور کے ڈسٹرکٹ کلکٹر اور اے ڈی سی آر کی جانب سے ازخود کیے جانے والے ایکشن نے غیر قانونی پریکٹس کا پردہ فاش کر دیا \'\'کمی فیس\'\' کی مد میں 35لاکھ روپے کی رقم حکومتی خزانے میں جمع کروا دی گئی ضلع قصور میں تعینات شعبہ سٹیمپ برانچ کا عملہ مکمل طور پر بے خبر نظر آیا۔روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق بورڈ آف ریونیو پنجاب اور فنانس کی جانب سے چند ماہ قبل ایک نوٹیفیکشن جاری کیا گیا اور پنجاب بھر کے اضلاع کے ڈی سی اوصاحبان کو ہدایت کی گئی کہ اس نوٹیفیکشن پر فوری طور پر عمل درآمد کروایا جائے نوٹیفیکشن کے مطابق 20روپے اشٹام بیان حلفی کو50روپے، 50روپے والے کو100روپے اور1000والے کو1200روپے میں تبدیل کیا گیا تھا تاہم پنجاب بھر میں اشٹام سیلرز کی جانب سے اپنی سابقہ روایت کو برقرار رکھتے ہوئے پرانی قیمتوں کے مطابق بیان حلفی،مختار نامہ خاص، معاہدہ بیع، مختار عام، طلاق اور شراکت نامہ جات تحریر کیے جا رہے ہیں جس کا انکشاف اس وقت ہو ا ہے جب ضلع قصور کے ڈی سی او عدنان ارشد اولکھ، اور ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر قصور محمد شاہد نے اپنا ایک سپیشل سکواڈ تشکیل کیا جنہوں نے ضلع قصور کی تحصیل قصور، تحصیل چونیاں ،تحصیل پتوکی، تحصیل کوٹ رادھا کشن میں اشٹام سیلرز کے تحریر کردہ ریکارڈ اور دفاتر کی انسپکشن کی تو معلوم ہوا کہ اشٹام سیلرز کی کثیر تعداد پرانی روایت کے مطابق غیر قانونی پریکٹس کا استعمال کر رہے تھے جن کی فہرست مرتب کی گئی تو معلوم ہوا کہ تحصیل قصور میں 196، چونیاں میں 51،پتوکی میں76اور کوٹ رادھا کشن میں 31اشٹام سیلرز اس غیر قانونی عمل میں ملوث پائے گئے ہیں اور جب ان کے ریکارڈ کا معائینہ کیا گیا تو \"کمی فیس\"کی مد میں 35 لاکھ روپے کا خسارہ حکومتی خزانے کو برداشت کرنا ظاہر ہوا ہے جس کے نتیجے میں تمام اشٹام سیلرز کو نوٹسسز جاری کر دئیے گئے نوٹسسز کا جواب نہ دینے پر40اشٹام سیلرز کو ڈیفالٹر قرار دیتے ہوئے ان کے لائسنس کینسل کر دئیے گئے ہیں جس کے بعد300سے زائد اشٹام سیلرز کی\"کمی فیس\"کی مد میں بننے والا ریونیو حکومتی خزانے میں جمع کروا دیا گیا پنجاب کے تمام اضلاع سے زائد ریونیو حکومتی خزانے میں جمع کروانے والا ضلع لاہور کے ڈسٹرکٹ کلکٹر اور انتظامی افسران کی نا اہلی ،لاپرواہی اور مبینہ غفلت کے باعث بھی پنجاب حکومت کو ماہانہ کروڑوں روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑ رہا ہے، دوسری جانب سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب ندیم اشرف کا کہنا ہے کہ حکومتی خزانے میں زیادہ سے زیادہ سے ریونیو جمع کروانے کا ٹارگٹ تما م اضلاع کے ڈی سی او صاحبان کو دے رکھا ہے جس کی مانیٹرنگ براہ راست خود کر رہا ہوں ،کمی فیس کے حوالے سے سامنے آنے والے ایشو کو نظر انداز نہیں کیا جائے گا غفلت کے مرتکب پائے جانے والے سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی روزنا مہ پاکستان کی نشاندہی پر نوٹس لے لیا ہے آئندہ ایک روز میں نتائج سامنے ہو ں گے۔

مزید : صفحہ آخر