20فروری تک رپورٹ نہ آئی تو وزیر اعظم اور وزراء کو توہین عدالت کا نوٹس دینگے : جسٹس شوکت عزیز صدیقی

20فروری تک رپورٹ نہ آئی تو وزیر اعظم اور وزراء کو توہین عدالت کا نوٹس دینگے : ...

اسلام آباد(آئی این پی ) اسلام آباد ہائیکورٹ نے فیض آباد دھرنا کیس میں راجہ ظفرالحق کمیٹی کی رپورٹ پیش نہ کیے جانے پر سخت برہمی کا اظہارکیا، جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ 20فروری تک رپورٹ نہ آئی تو وزیراعظم و دیگر وزرا ء کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کریں گے۔تفصیلات کے مطابق، اسلام آباد ہائیکورٹ میں فیض آباد دھرنا کیس کی سماعت جسٹس شوکت عزیزصدیقی نے کی۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل راجہ ارشد کیانی اور سیکریٹری دفاع عدالت میں پیش ہوئے۔ سیکریٹری دفاع کی جانب سے رپورٹ عدالت میں پیش کی گئی۔ راجہ ظفرالحق رپورٹ ایک مرتبہ پھرعدالت میں پیش نہ ہونے پر عدالت کی جانب سے برہمی کا اظہار کیا گیا۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ اگر 20فروری تک رپورٹ جمع نہ ہوئی تو وزیراعظم سمیت 3وزرا کو توہین عدالت کی نوٹس جاری کریں گے ۔ آپ یہ چاہتے ہیں کہ چیئرمین سینیٹ اور سپیکر قومی اسمبلی سے براہ راست ریکارڈ طلب کرنا پڑے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کہا کہ عدالت کیساتھ چھپن چھپائی کا کھیل نہ کھیلا جائے۔ بعد ازاں کیس کی سماعت 20فروری تک ملتوی کر دی گئی۔

مزید : علاقائی