جموں میں روہنگیا مہاجرین کی جھونپڑیاں نذر آتش کرنے کی کوشش ناکام

جموں میں روہنگیا مہاجرین کی جھونپڑیاں نذر آتش کرنے کی کوشش ناکام

جموں(این این آئی)مقبوضہ جموں میں گاندھی نگر کے علاقے چھنی راما میں ہندو انتہا پسندوں نے روہنگیا پناہ گزینوں کی جھونپڑیاں نذر آتش کرنے کوشش کی ۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق علاقے میں پوسٹر پھینکے گئے جن پر روہنگیا پناہ گزینوں کو واپس بھیجنے کا مطالبہ کیا گیا ہے ایک صحافی نے اپنی ایک ویڈیو میں کہا ہے کہ کچھ لوگ چھنی راما میں واقع روہنگیا بستی میں آئے اور روہنگیا پناہ گزینوں کی جھونپڑیوں کو نذرآتش کرنے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ جموں میں مقیم روہنگیا مسلمانوں کے خلاف پہلے سے ہی سازشیں جاری تھیں اور سنجوان کیمپ پر حملے کے بعد بغیر کسی تحقیقات کے روہنگیا پناہ گزینوں کو قصوروار ٹھہرایا گیا۔ویڈیو میں ایک بزرگ روہنگیامسلمان کو یہ کہتے ہوئے سنا گیاکہ تین موٹر سائیکل سوار آئے جن میں سے ایک باہر کھڑا رہا جبکہ دو اندر گھس آئے۔ انہوں نے اپنے چہرے چھپا رکھے تھے۔ ایک شخص نے تیل چھڑک دیا جبکہ دوسرے نے ماچس کی تیلی جلاکر اس پر پھینک دی اور اس کے بعد تینوں موقعے سے فرار ہوگئے۔ چہرے بند ہونے کی وجہ سے ہم انہیں پہچان نہیں پائے۔ ویڈیو میں ایک پناہ گزین خاتون کو یہ کہتے ہوئے سنا جاسکتا ہے کہ ہم برما میں پریشان کن صورتحال کی وجہ سے یہاں آئے ہیں۔ واضح رہے کہ سنجوان فوجی کیمپ پر حملے کے بعد نام نہاد اسمبلی کے سپیکر کویندر گپتا نے جو گاندھی نگر سے بی جے پی کے رکن اسمبلی ہیں، ایک بیان میں کہا تھاکہ یہ حملہ علاقے میں روہنگیا مسلمانوں کی موجودگی کی وجہ سے پیش آیاہے۔ انہوں نے کہا تھا کہ روہنگیا پناہ گزینوں کی علاقے میں موجودگی ایک سیکورٹی خطرہ بن گیا ہے اورحملے میں ان پناہ گزینوں کا ہاتھ ہوسکتا ہے۔ جموں میں سالہا سال سے تین لاکھ ہندو مہاجرین بھی رہائش پذیر ہیں اور انہیں ہرقسم کی سہولیات فراہم کی جارہی ہے۔ سرکاری اعداد وشمار کے مطابق جموں کے مختلف حصوں میں مقیم میانمار کے تارکین وطن کی تعداد محض 5 ہزار 700 ہے۔ بی جے پی نے عدالت عالیہ میں بھی درخواست دے رکھی ہے کہ برما کے روہنگیائی تارکین وطن اور بنگلہ دیشی شہریوں کی شناخت کرکے انہیں جموں بدرکیا جائے۔ دریں اثنا سرینگر کے علاقے کرن نگر میں بھارتی پیراملٹری سینٹرل ریزرو پولیس فورس کے کیمپ پر حملے میں ایک اہلکار ہلاک ہوگیا۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق سی آر پی ایف کے ترجمان راجیش یادو نے سرینگر میں صحافیوں کو بتایا کہ پیرا ملٹری کی 49ویں بٹالین سے تعلق رکھنے والا اہلکار زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہوگیا۔ کرن نگر میں سی آر پی ایف کی 23ویں بٹالین کا کیمپ اور ڈائریکٹر جنرل کا دفتر ایک دوسرے کے نزدیک ہیں۔ نامعلوم حملہ آوروں نے صبح سویرے سی آرپی ایف کی 23ویں بٹالین کے کیمپ پر حملہ کیا۔ آخری اطلاعات تک علاقے میں جھڑپ جاری تھی ۔

مقبوضہ کشمیر

مزید : علاقائی