لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائی کورٹ بار ایسوکشمیری مظلوم عوام نے لاکھوں جانوں کا نذرانہ پیش کیا،چودھری ذوالفقار

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائی کورٹ بار ایسوکشمیری مظلوم عوام نے لاکھوں ...

سی ایشن نے مطالبہ کیا ہے کہ مسلم ممالک آپس کے اختلافات ختم کرکے اقوام متحدہ میں ویٹو پاور حاصل کرنے کی کوشش کریں ۔اس سلسلے میں لاہور ہائی کورٹ بار کے اجلاس عام میں ایک قرارداد منظور کرتے ہوئے وکلاء نے مطالبہ کیا کہ کشمیر اور فلسطین میں آزادی کی تحریکوں کی کامیابی کے لئے مسلم ممالک اپنا کردار اداکریں ۔اس حوالے سے لاہور ہائی کور ٹ بار کے صدر چودھری ذوالفقار علی نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ترکی کے صدر کے کہنے پر اوآئی سی کا اجلاس بلایا گیا اور وہاں جتنی قراردادیں منظور ہوئیں،ان کی اقوام متحدہ نے کوئی پرواہ نہیں کی ،او آئی سی ممالک کو ہوش کے ناخن لینے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ حضورﷺ کی شان میں گستاخانہ خاکوں کے خلاف لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کی دائر کردہ رٹ پرعدالت عالیہ نے جو حکم جاری کیا اس پر عمل کے لئے حکومت پاکستان نے کوئی کردار ادانہ کیا۔ کشمیر کے مظلوم اور آزادی پسند عوام جنہوں نے لاکھوں جانوں کا نذرانہ پیش کیا اور اب بھی ہندو بنئے کے خلاف جدوجہد جاری رکھے ہوئے ہیں اور پاکستان کے ساتھ بھارت تین جنگیں اس لئے لڑ چکا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر کے عوام کو حقِ خودارادیت دلانے کے لئے پوری دنیا میں آواز بلند کر رہا ہے۔ انہوں نے اوآئی سی ممالک پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اوآئی سی ممالک اقوام متحدہ میں ویٹوپاور حاصل کریں تاکہ ان ممالک کی آواز بھی اقوام عالم میں سنی جا سکے۔اجلاس سے ہائی کورٹ بار کے فنانس سیکرٹری اور لاہور بار کے سابق صدر منصور الرحمن آفریدی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقوامِ متحدہ کا حال لیگ آف نیشنز سے بھی ابتر ہے۔ اقوام متحدہ پر امریکہ جیسے نام نہاد جمہوریت پسندممالک کا قبضہ ہے اور ’’جس کی لاٹھی اس کی بھینس‘‘ کا قانون رائج ہے جہاں پر دھونس اور بدمعاشی سے فیصلے کروائے جا رہے ہیں انہوں نے اقوام متحدہ کے کردار پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا جب تک پسماندہ اقوام آواز بلند نہیں کریں گی اقوام متحدہ ایسے ہی چلتی رہے گی انہوں نے کہا کہ اوآئی سی کے ممالک کو اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے اورذاتی مفاد کو بالائے طاق رکھ کر علیحدہ اقوام متحدہ قائم کرنی چاہئے جو مظلوم اقوام اور دکھی انسانیت کی خدمت کر سکے۔

مزید : صفحہ آخر