لودھراں، تبدیلی کا برج الٹ گیا ، تحریک انصاف کے امید وار اور جہانگیر ترین کے بیٹے علی ترین کو شکست مسلم لیگ ن کے اقبال شاہ ایک لاکھ 16 ہزار 590 لودھرووٹ لیکر لیگی کارکنوں کا جشن ، ڈھول کی تھاپ پر رقص ، مٹھائیاں تقسیم

لودھراں، تبدیلی کا برج الٹ گیا ، تحریک انصاف کے امید وار اور جہانگیر ترین کے ...

اں( بیورورپورٹ ،نمائندہ پاکستان)عام انتخابات سے قبل ہونے والے آخری ضمنی الیکشن میں لوھراں میں این اے 154میں ن لیگ کے امیدوار نے میدان مار لیا جبکہ دوسرے نمبر پر پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار رہے ۔تفصیل کے مطابق حلقہ این اے 154کے ضمنی الیکشن میں 10امیدواروں نے حصہ لیا جبکہ اصل مقابلہ ن لیگ کے امیدوار پیراقبال شاہ قریشی اور تحریک انصاف کے امیدوار علی خاں ترین کے درمیان تھا ۔جبکہ غیرحتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق ن لیگ کے امیدوار پیر اقبال شاہ قریشی(116590)ووٹ لیکر پہلے نمبر پر رہے اور پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار علی خاں ترین (91230)ووٹ لیکر دوسرے نمبر رہے۔اس طرح مسلم لیگ ن کے امیدوار پیر اقبال شاہ25230ووٹوں کی برتری سے کامیاب ہوئے واضح رہے کہ جہانگیر ترین نے یہ سیٹ تقریباًچالیس ہزار ووٹوں سے جیتی تھی ۔ تحریک لبیک کے ملک اظہر10212 ووٹ لے کر تیسرے اور پیپلز پارٹی کے مرزا محمد علی بیگ 3175ووٹ لے کر چوتھے نمبر پر رہے۔۔پیر اقبال قریشی کی کامیابی پرانکے ڈیرے پر ن لیگ کے کارکنوں کا رش لگ گیا اور کارکنوں نے ڈ ھو ل کی تھا پ پر بھنگڑے ڈالے اور پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں مٹھا ئیا ں تقسیم کی گئی اور مبا ر کبا د د ینے وا لو ں کا تا نتا بند ھ گیا لودہراں شہر بھر میں جشن کا سماں ہو گیا ۔ ن لیگ کے نو جو ا نو ں نے بھی خو ب ہلا گلا کیا ن لیگ کے کارکن چیئر مین میونسپل کمیٹی کے ڈیرے پر جمع ہو گئے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور کارکنوں نے بھنگڑے ڈالے۔ گزشتہ روز ہونے والے رواں پارلیمانی مدت کے آخری انتخابی معرکے کیلئے 10 امیدوار مدمقابل تھے۔ پی ٹی آئی کے جہانگیر ترین کے بیٹے علی ترین اور مسلم لیگ نون کے امیدوار پیر محمد اقبال شاہ میں کانٹے کا مقابلہ ہوا۔ حلقے میں 338 پولنگ سٹیشنز بنائے گئے تھے اور یہاں رجسٹرڈ ووٹروں کی تعداد 4 لاکھ 31 ہزار ہے۔ حلقے میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے اور دن بھر 2 ہزار سے زائد پولیس افسران و اہلکار فرائض انجام دیتے رہے۔ پولنگ ستیشنز پر فوج بھی تعینات رہیادھرپاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیرترین نے کہاہے کہ لودھراں میں ضمنی انتخاب کے دوران فوج کی موجودگی میں دھاندلی نہیں ہوسکتی۔پیر کو جہانگیرترین نے لودھراں میں ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) وزرا اور ایم این ایز اپنے امیدوار کی مہم چلاتے رہے الیکشن کمیشن کو نظر نہیں آیا۔انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کے لودھراں جلسہ پرالیکشن کمیشن کے نوٹس کا جواب دیں گے۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...