چیئر مین نیب کا افسروں کو کرپشن کیسز کی تفتیش اور تحقیقات جلد نمٹانے کا حکم

چیئر مین نیب کا افسروں کو کرپشن کیسز کی تفتیش اور تحقیقات جلد نمٹانے کا حکم

اسلام آباد(صباح نیوز)قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال نے نیب افسران کو بدعنوانیوں کے بارے میں تمام تحقیقات اور تفتیش کوقانون کے مطابق جلد منطقی انجام تک پہنچانے کی ہدایت کردی،انتباہ کیا گیا ہے کہ غیر معینہ مدت تک التواء میں رکھنے پر اب نہ صرف سخت نوٹس لیا جائے گا بلکہ غفلت برتنے والے نیب افسران کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی ۔اس امر کا اظہارانھوں نے قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں کیا ہے ۔ نیب ایگزیکٹو بورڈ نے بدعنوانی کے 23مقدمات کی تحقیقات کی ہدایت کردی ۔ پریس ریلیزکے مطابق قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس گزشتہ ورزقومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال کی زیرصدارت نیب ہیڈکوارٹر زمیں ہوا جس میں ڈائریکٹر جنرل انٹی کرپشن پنجاب کے خلاف اختیارات کے ناجائز استعمال سرکاری کام میں مبینہ طور پر رکاوٹ ڈالنے اور نیب کو مبینہ طور پر قانون کے مطابق ریکارڈ کی فراہمی سے انکار پر انکوائری کی منظوری دی گئی۔ پرائیویٹایزیشن کمشن آف پاکستان کے افسران/ اہلکاران اور دیگرکے خلاف پاک امریکن فرٹیلائزرز لمیٹڈڈ داؤدخیل میانوالی کی نجکاری میں مبینہ طور پر پیپرا رولز کی خلاف ورزی کا الزام ہے۔جس سے قومی خزانہ کو 3.889 ارب روپے کا نقصان پہنچا۔ نیپرا کی انتظامیہ ، وزارت پانی و بجلی، آئی پی پی ایس ، میسرز بلیو سٹار ہائیڈل پرائیویٹ لمیٹڈ ، میسرز بخش سولرز پرائیویٹ لمیٹڈ، میسرز سیف سولرز پرائیویٹ لمیٹڈ، میسرزلکی الیکٹرک پاور کمپنی لمیٹڈ ، میسرزصدکہ سنز انرجی لمیٹڈ ودیگر کیخلاف انکوائری کی منظوری دی گئی۔ملزمان پر مبینہ طور پر نرخوں میں سولر پاؤر پلانٹس کے ٹیرف میں مبینہ طور پر قواعد کے خلاف ورزی کرتے ہوئے کا الزام ہے -جس سے قومی خزانہ کو 200 ارب روپے سالانہ سے زائد کا نقصان پہنچا۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں ذاکر حسین سابق وائس چانسلر رجسٹرار ، ڈائریکٹر لیہ اور ساہیوال کیمپس گورنمنٹ کالج یونیورسٹی فیصل آباد اور میسرز ایکسپورٹ پرائیویٹ لمیٹڈ کیخلاف عدم ثبوت کی بنا پر انکوائریاں بند کرنے کی منظور ی دی گئی۔

چیئرمین نیب/حکم

مزید : کراچی صفحہ اول