راﺅ انوار کا چیف جسٹس پاکستان کو خط، آزاد جے آئی ٹی بنانے کا مطالبہ،سپریم کورٹ نے سابق ایس ایس پی ملیر کو گرفتار نہ کرنے کا حکم دے دیا

راﺅ انوار کا چیف جسٹس پاکستان کو خط، آزاد جے آئی ٹی بنانے کا مطالبہ،سپریم ...
راﺅ انوار کا چیف جسٹس پاکستان کو خط، آزاد جے آئی ٹی بنانے کا مطالبہ،سپریم کورٹ نے سابق ایس ایس پی ملیر کو گرفتار نہ کرنے کا حکم دے دیا

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار نے چیف جسٹس سپریم کورٹ کو خط لکھ دیا جس میں نقیب اللہ محسود قتل کیس میں آزاد جے آئی ٹی بنانے کامطالبہ کیا گیا ہے ۔

سپریم کورٹ نے نقیب اللہ کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دینے کافیصلہ کرتے ہوئے حکم دیا ہے کہ راﺅ انوار کو گرفتارنہ کیا جائے انہیں سپریم کورٹ آنے دیا جائے ،راؤانوارکوحفاظتی ضمانت دی جائے گی، چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ راﺅ انوار کو کچھ ہوا تو تمام شواہد ختم ہو جائیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے نقیب اللہ محسود قتل کیس کی سماعت کی، دوران سماعت جسٹس ثاقب نے کہاکہ یہ خط راؤانوارنے لکھا ہے،سابق ایس ایس پی ملیر کہتے ہیں وہ بےگناہ ہیں،ان کا موقف ہے وہ موقع پرموجودنہیں تھے۔

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے راﺅ انوار کے خط کی تصدیق کرتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ تحقیقاتی اداروں پرمشتمل کمیٹی نے رپورٹ دے دی ہے،آئی بی نے ملزم کی لوکیشن ٹریس کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے،اے ڈی خواجہ نے کہا کہ آئی بی کاکہناہے واٹس ایپ سے لوکیشن ٹریس نہیں ہوسکتی۔

اس پر چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اس کامطلب ہے ابھی تک کچھ نہیں ہوا؟ہرباروقت دیتے ہیں،لگتاہے راؤانوار کو ہمیں ہی پکڑناہوگا،ہمیں بتادیں راؤانوارکوکیسے پکڑناہے؟۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...