لڑکی کے عشق میں گرفتار ڈاکو نے رات کو اسکے گھر کی دیوار پھلانگی اور جب دیکھا کہ لڑکی قرآن پاک کی تلاوت کررہی ہے تو ڈاکو نے وہ کام کردکھایا کہ اب لوگ اس کا نام بڑے احترام سے لینے پر مجبور ہوجاتے ہیں،یہ شخص کون تھا اور اسے کیا مقام حاصل ہوا،جان کر آپ کا بھی ایمان تازہ ہوجائے گا

جب اللہ توفیق ہدایت عطا کرتا ہے توبہ صادق ہوجاتی ہے اور چور بھی قطب بن جاتے ہیں ۔تاریخ میں ایک بزرگ حضرت فضیل بن عیاض ؒ گزرے ہیں۔مقام معرفت طے کرنے سے پہلے انہیں توبہ نصیب ہوئی اور وہ ڈاکہ زنی چھوڑ کر اللہ کی راہ پر چل دئیے ۔آپؒ کو توبہ قرآن کریم کی تلاوت سننے کے بعد نصیب ہوئی اور کایا پلٹ گئی۔اس بارے دو مختلف طرح کی روایات پائی جاتی ہیں لیکن دونوں روایات میں اس بات پر اتفاق پایا جاتا ہے کہ آپ ؒ نے سورہ حدید کی ایک آیت مبارکہ سن کر خود پر لرزہ محسوس کیا اور دل کی دنیا بدل گئی۔یہ بھی بیان کیا جاات ہے کہ ڈاکہ زنی اور ڈاکووں کی سرداری کے باوجود آپ نیک اور رحم دل تھے اور نماز روزے حتٰی کہ نفلی روزوں کے بھی پابند تھے۔
ایک روایت کے مطابق حضرت فضیل بن موسی رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ حضرت فضیل بن عیاض ؒ چالاک ترین ڈاکو تھے ۔ توبہ کا یہ سبب یہ ہوا کہ وہ ایک لڑکی کے عشق میں گرفتار ہو گئے۔ آپ رات کے وقت دیوار پھلانگ کر اس کے گھر جانے لگے تو کانوں میں قرآن کریم کی یہ آیت پڑی ترجمہ’’ کیا ایمان والوں کے لیے وہ وقت نہیں آن پہنچا کہ ان کے دل ذکر الہی کے لیے تیار ہو جائیں؟‘‘ یہ سورہ الحدید کی آیت 16 تھی۔یہ سنتے ہی بے ساختہ آپ پکار اٹھے کہ پروردگار! وہ وقت آپہنچا ہے۔ اس کے بعد آپ واپس لوٹے تو رات ایک ویران جگہ پر گزاری ۔وہاں کچھ اور لوگ بھی موجود تھے۔ ان میں سے ایک بولا کہ یہاں سے کوچ کرو لیکن دوسرے نے کہا کہ رات یہیں ٹھہرو کیونکہ راستے میں فضیل ڈاکو موجود ہے ۔وہ ہمیں لْوٹ لے گا۔ ان کی یہ گفتگو سن کر حضرت فضیلؒ نے توبہ کر لی اور انہیں امن و امان سے رہنے دیا۔ حضرت ابو علی رازی رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ میں حضرت فضیل کی معیت میں تیس سال تک رہا ۔

مزید : روشن کرنیں

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...