مذاہب کے درمیان غلط فہمیاں پیدا کرنے والے انسانیت اور امن کے دشمن،محبت و امن کے رویوں کو پورے ملک میں پھیلا دیا: عالمی مجلس ادیان

مذاہب کے درمیان غلط فہمیاں پیدا کرنے والے انسانیت اور امن کے دشمن،محبت و امن ...

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) عالمی مجلس ادیان پاکستان کے زیراہتمام لاہور کے مقامی ہوٹل میں اسلامی نظریاتی کونسل پاکستان کے اشتراک سے ایک بین المذاہب مکالمے کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت مولانا محمد یٰسین ظفر نے کی جبکہ مہمانِ خصوصی ڈاکٹر سمیحہ راحیل قاضی (ممبر اسلامی نظریاتی کونسل پاکستان) تھیں۔

مکالمے میں تمام مسلم مسالک دیوبندی، بریلوی، اہلِ حدیث اور اہل تشیع علماءاور زعماءکے علاوہ دیگر مذاہب کے رہنماؤں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ حافظ محمد نعمان حامد (ایگزیکٹو ڈائریکٹر ورلڈ کونسل آف ریلیجنز)نے اپنی گفتگو میں کہا کہ مذاہب کے درمیان مشترکات پر بہت زیادہ کام کرنے کی ضرورت ہے، مختلف مذاہب کے پیروکاروں کے درمیان حائل خلیج کو ختم کرنے کیلئے کوشش کرنا ہر مذہب کے پیروکاروں کا اہم فریضہ ہے،اس حوالے سے عالمی مجلس ادیان پاکستان میں موثر انداز میں کام کررہی ہے, اس تنظیم نے تمام مذاہب او ر مسالک کو جمع کردیا ہے اور محبت و امن کے رویوں کو پورے ملک میں پھیلا دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیغامِ پاکستان ایک ایسی دستاویز ہے جو پُرامن پاکستان کے خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے کے لیے ایک نشانِ راہ ہے۔

ڈاکٹر سمیحہ راحیل قاضی نے کہا کہ ہم آہنگی سے مراد یہ ہے کہ دو جماعتوں،فرقوں، مذاہب یا گروہوں کے درمیان مشترکہ نکات تلاش کیے جائیں جن کو بنیاد بنا کر بہترین معاشرتی تعلقات استوار کئے جاسکیں۔ تمام مذاہب میں کچھ مشترکات ایسے ہیں جن پر سب کا اتفاق ہے،جیسے اخلاقیات کا دائرہ کار جیسے جھوٹ بولنا،قتل کرنا،دھوکہ دینا،بداخلاقی کرنا، کسی کی توہین کرنا کسی بھی مذہب میں جائز نہیں,حتیٰ کہ اگر غیر مسلم کو کافر کہنے سے تکلیف ہوتی ہے تو اس کی بھی اسلام میں اجازت نہیں, آپ اس کو کسی ایسے لفظ سے پکار نہیں سکتے جس سے اس کی دل شکنی ہو, اگر ہم ان اصولوں کو لے کر چلیں گے تو معاملات درست ہو جائیں گے۔

مولانا عاصم مخدوم نے کہا فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی جب ہم بات کرتے ہیں اور مسلمان ہونے کا دعویٰ کرتے ہیں اس صورت میں ہمارے جو اصول ہیں اس پر ہم سب متفق ہیں,صرف فروع ہیں جن میں ہمارے درمیان تفریق ہے اور ان کو حل کرنے کا آسان طریقہ یہی ہے کہ اپنے مسلک اور طریقہ کار کو چھوڑو نہیں اور دوسرے مسلک اور طریقہ کار کو چھیڑو نہیں۔ ایک ہے فرقہ واریت اور ایک ہے اختلاف، یہ دونوں علیحدہ چیزیں ہیں۔ فرقہ واریت کی اسلام میں کوئی گنجائش نہیں۔

مولانا محمد یٰسین ظفر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مذاہب کے درمیان غلط فہمیاں پیدا کرنے والے انسانیت اور امن کے دشمن ہیں۔ پیغامِ پاکستان کی صورت میں تمام مقتدر شخصیات نے دلیل کی زبان سے انتہا پسندوں اور دہشت گردوں کو واضح پیغام دیا ہے کہ ان کی انسانیت کش سوچ کا کسی مذہب سے کوئی تعلق نہیں ہے اور مٹھی بھر دہشت گردوں کے خلاف دنیا کے کروڑوں امن پسند متحرک ہوجائیں تو انتہائی قلیل عرصہ میں دنیا دہشت گردی کی لعنت سے چھٹکارا پا لے گی۔ اس موقع پر دیگر قائدین نے بھی خطاب کیا اور قومی بیانیہ ''پیغامِ پاکستان'' کی عوام الناس میں تشہیر کے لیے مُلک بھر میں سیمینار، کانفرنسز اور ورکشاپس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا۔

مکالمے میں شریک دیگر مقررین میں مولانا محمد یٰسین ظفر (چیئرمین عالمی مجلس ادیان پاکستان، سیکریٹری جنرل وفاق المدارس السلفیہ پاکستان)، پیر شفاعت رسول نوری (مرکزی نائب صدر جمعیت علمائپاکستان نیازی)، مولانا عبدالمالک (شیخ الحدیث جامعہ اسلامیہ منصورہ)، علامہ سید قاضی نیاز حسین نقوی (نائب صدر وفاق المدارس الشیعہ پاکستان و نائب مہتمم جامعة المنتظر، لاہور)، ڈاکٹر سمیحہ راحیل قاضی (رکن اسلامی نظریاتی کونسل پاکستان)، فادر ندیم فرانسس (سیکریٹری بشپ کانفرنس کیتھولک چرچ آف پاکستان)، فادر جیمز چنن(ڈائریکٹر پیس سنٹر لاہور)، علامہ عاصم مخدوم (مرکزی راہنما جمعیت علماءاسلام س، علامہ مفتی سید عاشق حسین (چیئرمین اتحاد علماءکونسل، پاکستان)، علامہ ضیاءالحق نقشبندی (چیئرمین تنظیم اتحاد اُمت پاکستان)، ڈاکٹر عبدالغفور راشد (کوآرڈینیٹر وزیر اعلیٰ پنجاب)، سردار کلیان سنگھ، بھگت لال کھوکھر، پیر ولی اللہ شاہ بخاری (صدر علماءو مشائخ ونگ، مسلم لیگ)، مولانا محمد ندیم سرور معاویہ (چیئرمین متحدہ امن فورم، پنجاب)، ڈاکٹر مرقس فدا (چیئرمین 7 سٹار ٹی وی چینل، لاہور)، علامہ شبیر انجم، ڈاکٹر شاہدہ پروین، علامہ شکیل الرحمٰن ناصر، ڈاکٹر بدر منیر، ڈاکٹر امجد چشتی، ڈاکٹر مجید ایبل، علامہ حسن ہمدانی، حافظ کاظم رضا نقوی، علامہ وقار نقوی ،مولانا اسلم صدیقی، مولانا عبدالرب امجد، حافظ محمد حسین گولڑوی، مولانا اسلم ندیم نقشبندی، مولانا اعجاز احمد (جہلم) علامہ اصغر عارف چشتی ،حاجی عامر رشیداور سید شبیح حسن شیرازی شامل ہیں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...