سرینگر،جموں شاہراہ کی بندش سے ہزاروں مسافر پھنس گئے، پاکستان اور آزادی کے حق میں نعرے

سرینگر،جموں شاہراہ کی بندش سے ہزاروں مسافر پھنس گئے، پاکستان اور آزادی کے حق ...

سرینگر(این ین آئی)مقبوضہ کشمیر میں جموں میں پھنسے کشمیری مسافروں اور گاندھی میموریل سائنس کالج کے طلباء نے بھارت کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستان اور آزادی کے حق میں نعرے لگائے۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق سرینگر جموں شاہراہ بند ہونے کے باعث گزشتہ چھ روز سے پھنسے مسافرکالج کے جیوگرافی ڈیپارٹمنٹ کے نزدیک جمع ہوئے اور احتجاجی مظاہر ہ کیا۔ پولیس حکام نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ مسافروں نے اس موقع پر پاکستان اور آزادی کے حق میں نعرے لگائے۔پولیس کے لاٹھی چارج میں احتجاج کرنے والے کئی طلباء زخمی ہوگئے۔پولیس نے بھارت مخالف نعرے لگانے پر جموں کے نوآباد پولیس سٹیشن میں دو کیس درج کئے ہیں۔دریں اثناء حریت فورم کے چےئرمین میرواعظ عمرفاروق نے ایک بیان میں گزشتہ چھ روز سے سرینگر جموں شاہراہ پر پھنسے ہزاروں افراد کو مدد فراہم کرنے میں ناکامی پر قابض انتظامیہ پر شدید تنقید کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جن لوگوں نے بیرونی دنیا سے ملانے والے ہمارے قدرتی راستے بند کرکے ہمیں اس واحد مصنوعی راستے کا محتاج بنایاہے جو موسم سرما میں اکثر بند رہتا ہے، یہ ان کی ذمہ داری ہے کہ وہ کشمیریوں کو درپیش شدید مشکلات کم کرانے اور کم از کم انہیں اپنے گھر پہنچنے کے لیے مدد فراہم کریں۔

نعرے

مزید : صفحہ اول