لکشمی چوک میں تعینات ٹریفک وارڈن کا موٹرسائیکل سوارنوجوان پربیہمانہ تشدد

لکشمی چوک میں تعینات ٹریفک وارڈن کا موٹرسائیکل سوارنوجوان پربیہمانہ تشدد

لاہور ( کرائم رپورٹر ) لکشمی چوک میں تعینات ٹریفک وارڈن کا موٹرسائیکل سوارنوجوان پربیہمانہ تشددڈسنگین نتائج کی دھمکیاں ،تفصیل کے مطابق 6فروری کو لکشمی چوک سے رات 9بجے نوجوان فرقان اپنی موٹرسائیکل پر بھائی عرفان کے ساتھ گھر کی طرف جارہا تھا کہ چوک پرکھڑے ٹریفک وارڈن نواز نے زبردستی روک کرچالان کردیا اس کے باوجود کے ان کے پاس ہیلمٹ بھی تھا ،فرقان اوراسکے بھائی عرفان نے چالان کی وجہ پوچھی تو نواز نے اپنے دیگرٹریفک وارڈن طاہراورغلام حسین اعوان کوبلا لیا اور دنوں بھائیوں کے ساتھ بدتمیزی کرنے لگے ۔انکی مزاحمتپرتینوں اہلکاروں نے فرقان پرحملہ کردیا اورشدید تشدد کانشانہ بناڈالا اس دوران میڈیا کے ایک نمائندہ نے ان دونوں بھائیوں کی جان چھڑائی مگر ٹریفک وارڈن نے اسے بھی دھمکیاں دینا شروع کردیں ۔اس کے بعد وہ دونوں بھائیوں کواپنے دفتر لے گئے اوروہاں ہراساں کرتے رہے اورکافی دیر حبس بیجا میں رکھا ۔ٹریفک وارڈن نوازاور دیگر نے فرقان کو پریشان کرتے ہوئے صلح نامہ پرزبردستی دستخط کروالے اور کہنے لگے کہ جاؤ اب آئی جی پنجاب یاسی ٹی او لاہورکے پا س جا کرہماری شکایت کرو ہم دیکھیں گے کوئی ہمارا کچھ نہیں بگاڑسکتا ۔ موقع پر لوگوں اور پولیس افسروں نے سارا معاملہ خود دیکھامگرآج تک ان وارڈنز کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی ۔ نوجوان فرقان اور عرفان نے پولیس کے اعلی افسران سمیت سی ٹی او لاہور سے اپیل کی ہے کہ ان پر ہونیوالے تشدد ،نارواسلوک اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دیے والے ٹریفک وارڈنز نواز، طاہراورغلام حسین اعوان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے

مزید : علاقائی