7 سال عمر لیکن ہے دنیا کا تیز ترین بچہ، 100 میٹر کا فاصلہ اتنے کم وقت میں طے کرلیا کہ یوسین بولٹ کو بھی یقین نہ آئے

7 سال عمر لیکن ہے دنیا کا تیز ترین بچہ، 100 میٹر کا فاصلہ اتنے کم وقت میں طے ...
7 سال عمر لیکن ہے دنیا کا تیز ترین بچہ، 100 میٹر کا فاصلہ اتنے کم وقت میں طے کرلیا کہ یوسین بولٹ کو بھی یقین نہ آئے

  

ٹال ہاسی (ڈیلی پاکستان آن لائن) امریکی ریاست فلوریڈا سے دنیا کا تیز ترین بچہ سامنے آگیا ہے جس نے اتنے کم وقت میں 100 میٹر کا فاصلہ طے کیا ہے کہ پوری دنیا میں اس کی دھوم مچی ہوئی ہے۔

امریکی ریاست فلوریڈا سے تعلق رکھنے والے 7 سالہ رڈولف انگرم کو بلیز(شعلہ) کے نام سے پکارا جاتا ہے۔رڈولف نے صرف 7 برس کی عمر میں ایک مقابلے کے دوران 100 میٹر کا فاصلہ 13 اعشاریہ 48 سیکنڈز میں طے کیا ہے۔ اس سے قبل جس بچے نے 7 برس کی عمر میں تیز ترین دوڑنے کا ریکارڈ قائم کیا تھا اس نے 100 میٹر کا فاصلہ 13 اعشاریہ 67 سیکنڈز میں طے کیا تھا۔

7 سالہ رڈولف انگرم ریاستی سطح پر ہونے والے دوڑ کے مقابلوں میں بھی باقاعدگی کے ساتھ حصہ لیتا ہے۔ وہ اب تک اپنی خداداد صلاحیتوں کی بنا پر 36 میڈلز جیت چکا ہے جن میں سے 20 گولڈ میڈل ہیں۔

واضح رہے کہ دنیا کے تیز ترین انسان کہلانے والے یوسین بولٹ نے 2009 میں تیز رفتاری کا عالمی ریکارڈ قائم کیا تھا۔ انہوں نے 9 اعشاریہ 58 سیکنڈ کے وقت میں 100 میٹر کا فاصلہ طے کرکے نہ صرف ورلڈ ریکارڈ قائم کیا بلکہ دنیا کے تیز ترین انسان بھی کہلائے۔ اگر رڈولف کی صلاحیتوں کو ٹھیک طریقے سے پالش کیا گیا تو بہت جلد وہ یوسین بولٹ سے دنیا کے تیز ترین انسان کا خطاب بھی چھین سکتا ہے۔

۔۔۔ ویڈیو دیکھیں ۔۔۔

مزید : کھیل