3 لوگوں نے ونڈ سکرین پر اینٹ مار کر کار روک لی، لڑکی کو باہر نکالااور اپنے 7 مزید دوستوں کو بلا کر لڑکی کے ساتھ ۔۔۔ بھارت سے انتہائی شرمناک خبر آگئی

3 لوگوں نے ونڈ سکرین پر اینٹ مار کر کار روک لی، لڑکی کو باہر نکالااور اپنے 7 ...
3 لوگوں نے ونڈ سکرین پر اینٹ مار کر کار روک لی، لڑکی کو باہر نکالااور اپنے 7 مزید دوستوں کو بلا کر لڑکی کے ساتھ ۔۔۔ بھارت سے انتہائی شرمناک خبر آگئی

  

لدھیانہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی ریاست پنجاب کے شہر لدھیانہ میں اجتماعی زیادتی کا واقعہ پیش آیا ہے ۔ پولیس نے تین ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے جنہیں عدالت نے 7 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا ہے۔

اجتماعی زیادتی کا واقعہ 9 اور 10 فروری کی درمیانی شب رات ساڑھے 8 بجے کے قریب پیش آیا۔ ایک 20 سالہ طالبہ اپنے دوست کے ساتھ مارکیٹ سے آرہی تھی کہ موٹرسائیکل سوار تین ملزمان نے ان کی گاڑی کی ونڈ سکرین پر اینٹ پھینک دی۔ اینٹ لگنے کے بعد گاڑی جیسے ہی رکی تو ملزمان نے کار سواروں پر حملہ کردیا۔تینوں ملزمان نے لڑکے کو تشدد کا نشانہ بنایا اور دونوں کو ویران جگہ پر لے گئے۔ ملزمان نے مذکورہ جگہ پر پہنچ کر اپنے 7 مزید دوستوں کو بلالیا ۔

متاثرہ لڑکی کے مطابق ملزمان نے ان سے ایک لاکھ روپے بھتے کا مطالبہ کیا ۔ لڑکے نے اپنے دوست کو فون کال کرکے پیسے لانے کو کہا لیکن وہ پولیس سٹیشن چلا گیا۔ رات 11 بجے کے قریب دوست پولیس سٹیشن گیا لیکن ڈیوٹی پر موجود اے ایس آئی نے اس کی بات سنی ان سنی کردی۔ کافی بحث کے بعد پولیس اہلکار بتائی ہوئی جگہ پر پہنچا لیکن متاثرین کو ڈھونڈے میں ناکام رہا۔

لڑکی نے بتایا کہ 10 لوگوں نے مل کر اسے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور یہ سلسلہ ہفتے اور اتوار کی درمیانی شب 2 بجے تک چلتا رہا۔ ’باقی لوگ چلے گئے لیکن تین ملزمان موقع پر ہی موجود تھے ، میرے دوست نے قریب پڑی شراب کی بوتل اٹھا کر ملزمان پر حملہ کیا جس کے بعد وہ بھی چلے گئے‘۔

لڑکی اور اس کے دوست کی جانب سے اتوار کی شام پولیس کو شکایت کی گئی جس کے بعد مقدمہ درج کرلیا گیا۔ڈیوٹی پر موجود اے ایس آئی کو معطل کردیا گیا ۔ پولیس نے متاثرہ لڑکی کی مدد سے 6 ملزمان کے خاکے تیار کیے اور تین ملزمان کو گرفتار کرلیا۔ گرفتار ملزمان کی شناخت جگروپ سنگھ، رنبیر سنگھ خطرہ اور صادق علی کے نام سے ہوئی ہے۔

ڈی آئی جی پولیس کا کہنا ہے کہ تفتیش کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ اجتماعی زیادتی کے واقعے کا مرکزی ملزم جگروپ سنگھ ہے۔ تفتیش کے دوران صادق علی نے اپنے دیگر 5ساتھیوں کے نام بھی بتائے ہیں۔ اجے کمار، الیاس ، برج نندن ، سیف علی ، سمرو اور سمرو کا ایک ساتھی مفرور ہیں جن کی تلاش کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /انسانی حقوق