روزگار کے مواقع پیدا کرنے کیلئے افراد زر میں کمی لائی جائے‘ لیاقت بلوچ

روزگار کے مواقع پیدا کرنے کیلئے افراد زر میں کمی لائی جائے‘ لیاقت بلوچ

  



ملتان (سٹی رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ کشمیر، افغانستان و فلسطین کے ابتر ہوتے حالات کا تقاضا ہے کہ وزیراعظم عمران خان اپنا رویہ اور روش بدلیں۔ مسلسل نقصان کے ازالہ کے لیے قومی اتفاق رائے کی حکمت عملی بنائی جائے۔ معاشی بحران سود، قرضوں و بے تحاشا غیر ترقیاتی اخراجات کی وجہ سے ہے۔ مہنگائی کے خاتمہ اور(بقیہ نمبر8صفحہ12پر)

روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لیے افراط زر میں کمی لائی جائے۔ بجلی، گیس، تیل کی قیمتوں میں 25 فیصد کمی کی جائے اور زراعت، صنعت و تجارت پر مسلط خوف ختم کیا جائے۔ معاشی پہیہ گھومے گا تو عوام کی قوت خرید میں اضافہ ہوگا وگرنہ حکومتی معاشی تدبیریں مزید تباہی اور مزید کرپشن لائیں گی۔انہوں نے کہاکہ ہماری سیاست، معاشرت و معیشت پر مفاد پرست عناصر کا غلبہ ہے۔ انسانی قدریں زوال پذیر اور باہمی احترام و برداشت کا جذبہ مفقود ہورہاہے۔سیاسی و دینی جماعتیں اپنے کارکنان کی تربیت سے غافل ہیں۔ سول سوسائٹی میں منتخب قیادت اور تنظیمیں انسانوں کے دکھ درد کا احساس کریں۔ احترام انسانیت اور انسان سازی کے زوال پذیر نظام کا سدباب کریں۔ سچائی، امانت و دیانت، خدمت، دوسرے کا حق ادا کرنا اور خوش خلقی،معاشرہ کی تعمیر کے لیے ہر فرد کی ذمہ داری ہے۔

لیاقت بلوچ

مزید : ملتان صفحہ آخر