پولیس ملازمین کا گھر پر دھاوا‘ خواتین مشتعل‘ اہلکاروں کی زبردست دھلائی

پولیس ملازمین کا گھر پر دھاوا‘ خواتین مشتعل‘ اہلکاروں کی زبردست دھلائی

  



خانیوا(نمائندہ پاکستان) سفید کپڑوں میں ملبوس پولیس تھانہ سٹی میانچنوں کے اے ایس آئی اور کانسٹیبل کی ڈاکو سمجھ کر خواتین نے پکڑ کر دھلائی کردی۔ پولیس نے پورے خاندان کے خلاف سنگین دفعات کا مقدمہ درج کرلیا۔میڈیا نے تھانیدار کے سفیدپارچات میں زخمی ہونے کی تصویر حاصل کرلی۔ تفصیل کے مطابق پولیس تھانہ سٹی میا(بقیہ نمبر43صفحہ12پر)

نچنوں نے منشیات فروخت کرنے کے شبہ میں اوڈھ کالونی میانچنوں کے رہائشی محمدمنشاء عرف آلو کے گھر میں سفیدکپڑوں میں ملبوس ہوکر گھر کے باہر سے سیڑھی لگاکر چھت کے ذریعے داخل ہوئے اہلخانہ نے مبینہ طور پر ڈاکوسمجھ کر تھانیدار گلفراز اور کانسٹیبل کی دھلائی کردی جس کو دیکھ کر سفیدملبوس میں داخل ہونے والے ملازمین کی دوڑیں لگ گئیں۔ اور اپنے تحفظ کے لئے اہل خانہ کے خلاف زیر دفعات 324'353،186'201،148،149،427ت پ کے تحت مقدمہ درج کرلیاہے۔ دریں اثناء محمدمنشاء کی بیوی نے میڈیاسے گفتگو کرتے ہوئیالزام عائد کیا کہ پولیس نے ہماریمخالفین کی ایماء پر پولیس نیسفیدچارچات میں ملبوس ہوکر چادر اور چاردیواری کاتقدس پامال کیا ہے اور خواتین کی بے حرمتی کی ہے طلائی زیورات اور نقدی اٹھاکر لے گئی ہے پورے گھر کی تلاشی لی اس دوران ایک پولیس اہلکار میرے خاوند کو پکڑنے کے دوران ''ٹھُڈا ''لگنے کی وجہ سے گرپڑا اور چوٹ لگی۔ میرے خاوندکے خلاف کسی قسم کاکوئی ریکارڈ نہیں۔ اگر ہم منشیات فروخت کرتے توہمارے گھر کے چند قدم کے فاصلے پر تھانہ صدر ہے۔ آئی جی پنجاب پولیس اور چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کی ہے کہ ہمیں انصاف فراہم کیاجائے۔

دھلائی

مزید : ملتان صفحہ آخر