ترک صدر 2روزہ دورہ پر آج اسلام آباد پہنچیں گے

  ترک صدر 2روزہ دورہ پر آج اسلام آباد پہنچیں گے

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) ترک صدر طیب اردوان 2روزہ دورے پر آج جمعرات کو اسلام آباد پہنچیں گے۔ترک صدر کے دورہ پاکستان کے دوران سٹرییجک اکنامک فریم ورک اور پلان آف ایکشن پر دستخط کیے جائیں گے،اس حوالے سے وزارت اقتصادی امور نے تیاریاں مکمل کر لیں۔ ذرائع کے مطابق تعلیم، دفاع اور اقتصادی شعبوں میں باہمی تعاون کے دس سے بارہ معاہدے پر دستخط متوقع ہیں، رجب طیب اردوان اسلام آباد میں پاک ترک اعلی سطح کی تزویراتی تعاون کونسل کے اجلا س میں بھی شرکت کریں گے۔ اجلاس کی صدارت ترک صدر طیب اردوان اور عمران خان کی جانب سے مشترکہ طور پر کئے جانے کا امکان ہے،پاک ترک اعلی سطح کی تزاویراتی تعا و ن کونسل کے اجلاس میں دو طرفہ تعاون مزیدفروغ پائیگا۔کونسل اسٹریٹیجک اکنامک فریم ورک کی رہنمائی اور نگرانی کریگی،ترک صدر کی آمد کے دوران معاہدے کو حتمی شکل دی جا ئیگی۔ ذرائع نے بتایا دورے کے دوران باہمی تعلقات کے فروغ کیلئے تعاون کے مزید شعبوں کی تلاش بھی کی جائیگی،ترک صدر کے ہمراہ ایک بڑا وفد بھی ہو گا،جس میں سرمایہ کار اورکاروباری شخصیات شامل ہونگی،ترک صدر پاکستان میں سرمایہ کاری سمیت کئی منصوبوں کی یادداشت مفاہمت پر دستخط کریں گے،دورہ پاکستان کے دوران ترک صدر وزیر ا عظم عمران خان،صدر مملکت عارف علوی، اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے ملاقاتیں کریں گے،ان ملاقاتوں میں باہمی تعاون کے فروغ، دفا عی تعا و ن میں بہتری،افغانستان میں قیام امن، مشرق وسطیٰ کی صورتحال،سمیت باہمی سرمایہ کاری میں اضافہ پر تبادلہ خیال کیا جائیگا۔سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے مطابق ترک صدر ر جب طیب اردوان دورہ پاکستان کے دوران کل 14 فروری بروز جمعہ پارلیمان کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔یاد رہے ترک صدر آخری مرتبہ 2016 میں اپنی اہلیہ اور اعلیٰ سطح کے وفد کے ہمراہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت میں پاکستان کے دورے پر آئے تھے۔اس وقت تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی نے ترک صدر کے پارلیمان کے مشترکہ ا جلاس سے خطاب میں شرکت کا بائیکاٹ کیا تھا۔ذرائع کے مطابق ترک صدر کو دورے کی دعوت وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے دی گئی تھی،گذشتہ برس شام میں جاری فوجی آ پر یشن کی مصروفیات کے باعث ترک صدر پاکستان نہیں آ سکے تھے،ترک صدر کو 23 اکتوبر کو پاکستان کا دورہ کرنا تھا،ترک صدر کا تین مرتبہ دورہ پاکستان ملتوی ہو چکا ہے۔ واضح ر ہے ترکی اور پاکستان کے برادرانہ تعلقات انتہائی گرمجوش اور مضبوط ہیں اور ترکی نے ہمیشہ پاکستان کی اخلاقی سفارتی حمایت اور مدد کی ہے۔اس کے علاوہ ترکی، مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے پاکستانی موقف کا بھرپور حامی بھی ہے، جس نے ببانگ دہل مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ظلم و ستم کیخلاف اپنی آواز بلند کی۔

ترک صدر دورہ

مزید : صفحہ اول