کرونا وائرس،چینی عوام کے ساتھ ہیں،پاک چین جوائینٹ چیمبر

کرونا وائرس،چینی عوام کے ساتھ ہیں،پاک چین جوائینٹ چیمبر

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)پاک چین جوائینٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے کرونا وائرس کی وجہ سے پید شدہ بحران سے نمٹنے کے حوالے سے چینی عوام کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔ اس سلسلے میں جاری بیان میں پاک چین چیمبر کے صدر زرک خان، سینئر نائب صدر معظم گھرکی نائب صدر اور سیکرٹری جنر ل صلاح الدین حنیف نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ کرونا وائرس ایک عالمی مسئلہ ہے مگر افسوس کہ چین دشمن ممالک اسے صرف چین کے ساتھ مخصوص کر کے منفی پراپیگنڈہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی عوام اس بحرانی کیفیت میں چینی عوام کا ہر ممکن ساتھ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاک چین چیمبر کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کیلئے فند ریزنگ کا پروگرام بھی شریک دے رہا ہے۔ انہوں نے امید کی کہ دیگر ادارے بھی ایسی فنڈ ریزنگ سکیمیں تشکیل دے کر چینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کا عملی ثبوت دیں گے۔ چیمبر کے صدر زرک خان نے کرونا بحران سے نمٹنے کیلئے چین کی ہنگامی منصوبہ بند ی کو سراہا اور کہا کہ صرف دس دنوں میں ایک ہزار بیڈز پر مشتمل 25 ہزار مربع فٹ پر پھیلے سب سے بڑے ہسپتال تعمیر بھی صرف چین ہی کر سکتاتھا ا

ور اب چین کے صف اول کے سائینسدان کرونا وائس کی ویکسین تیا ر کرنے بھی دن رات ایک کئے ہوئے ہیں۔

انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ چین اپنی لگن اور خداداد صلاحیتوں کی وجہ سے کرونا کے خلاف ویکیسین تیار کرنے میں بہت جلد کامیاب ہو جائے گا۔زرک خان نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ چین دشمن ممالک متذکرہ قدرتی بحران کا ذمہ چین پر تھوپنے کی کوشش کررہے ہیں اور اس بحران سے نمٹنے میں مدد کی بجائے اسے تعصب کی نظر سے دیکھ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایسے وائرسوں سے ماضی میں بھی اقوام عالم متاثر ہوتی رہی ہیں۔ حال ہی میں امریکہ میں ظاہر ہونے والے ہِنی وائرس نے 2009 جو تباہی مچائی تھی دنیا سے ڈھکی چھپی نہیں تب اسے امریک وائرس نہیں کہا گیا تھا۔اس طرح1965-66میں کرونا وائرس جیسے ایک وائرس کی وجہ سے انگلینڈ میں پلیک پھیلا اور ایک لاکھ کے لگ بھگ لوگ لقمہءِ اجل بن گئے تھے۔ اس سے قبل 1493 میں کرسٹو فر کولمبس کے ساتھی جو کہ انفلوئینزا کے وائس کا شکا ر تھے جب سپین پہنچے تو سپین کے پچاس لاکھ سے زائد افراد اس وائرس سے متاثر ہوکر ہلا ک ہو گئے تھے۔ تب ان وائرسوں کو دنیا کے کسی ملک کے نام سے منسوب نہیں کیا تھا۔ لہٰذا پاک چین چیمبر کے عہدیداروں نے اس امر پر احتجاج کیا کہ عالمی میڈیا کرونا وائرس کو چینی وائرس کا نام دے کر چین کو بدنام کرنے کی کوشش کر رہاہے۔ انہوں نے امید کی کہ پاکستانی میڈیا دنیا کی اس سازش کا حصہ نہیں بنے گا۔ اور جس طرح چین ہمارے ہر بحران میں ہمارے شانہ بشانہ کھڑا ہوا ہے، ہم بھی انکے اس بحران میں چینی عوام کے شانہ بشانہ کھڑے رہیں گے۔

مزید : کامرس