بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں گھر گھر تلاشی، خواتین، بچوں پر تشدد، 4گرفتار

  بھارتی فورسز کی مقبوضہ کشمیر میں گھر گھر تلاشی، خواتین، بچوں پر تشدد، ...

  



سرینگر (این این آئی)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز نے سرینگر اور دیگر علاقوں میں محاصروں اورتلاشی کارروائیوں کے دوران مردوخواتین کو تشددکا نشانہ بنایا اور اور بچوں کوہراساں کیا۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق پیراملٹری فورسز اورپولیس اہلکاروں نے سرینگر، بانڈی پورہ، گاندربل، بڈگام، کپواڑہ، بارہمولہ، اسلام آباد، پلوامہ، شوپیان، کولگام، ڈوڈہ،کشتواڑ، راجوری اور پونچھ اضلاع کے مختلف علاقوں میں کارروائیاں کیں۔انہوں نے مختلف علاقوں کے داخلی اورخارجی راستوں کوبند کردیا اور گھر گھر تلاشی لی اس موقع پر فوجیوں نے گھروں کی توڑ پھوڑ بھی کی۔ دریں اثناء بھارتی پولیس نے 25غیر ملکی سفارتکاروں کے نام نہاد دورہ کشمیر کے موقع پرسرینگر میں احتجاج کرنے والے چار کشمیری نوجوانوں کو گرفتارکرلیا۔ بھارتی حکومت علاقے میں حالات کو معمول کے مطابق دکھانے کے لئے ایسے دوروں کا اہتمام کررہی ہے۔ ایک کشمیری تاجر عبدالرشید نے سرینگر میں صحافیوں کو بتایا کہ ان دوروں کا اہتمام عالمی برادری کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کیلئے کیا جارہا ہے کہ کشمیر میں سب اچھا ہے۔ ایک طالب علم ابرار احمد نے کہاکہ ان وفود کو کشمیریوں کودرپیش مشکلات اوران کے مطالبات جاننے کیلئے انتہائی سکیورٹی والے علاقوں سے باہر آنا چاہیے۔ ڈیموکریٹک پولیٹکل موومنٹ نے سرینگر میں ایک اجلاس میں عالمی برادری خاص طورپر امریکہ اور اقوام متحدہ پر زوردیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال نوٹس لیں۔اجلاس کی صدارت پارٹی چیئرمین فردوس احمد وانی نے کی۔ جموں و کشمیر پیپلز لیگ کے چیئرمین مختار احمد وازہ نے اسلام آباد قصبے میں اپنی رہائش گاہ پر پارٹی کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے تنازعہ کشمیر کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے پر زوردیا۔ انہوں نے بھارت اور پاکستان پر زوردیا کہ وہ امن کی راہ اختیا کریں کیونکہ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں۔

مقبوضہ کشمیر

مزید : صفحہ آخر