مریضہ کی کلینک میں ہلاکت،9 سال بعد کیس میں دفعہ302 شامل

    مریضہ کی کلینک میں ہلاکت،9 سال بعد کیس میں دفعہ302 شامل

  



لاہور(نامہ نگار)سیشن جج لاہور قیصر نذیر بٹ نے ڈاکٹر نائلہ کے خلاف غلط آپریشن سے ثنا نامی خاتون کی ہلاکت کے کیس میں 9 سال بعد دفعہ 302 لگنے پر چالان کو سماعت کے لئے ایڈیشنل سیشن جج اکرام الحق کی عدالت میں بھجوادیاہے۔فاضل جج اس کیس کی سماعت آج 13فروری کو کریں گے،ثنا نامی خاتون کی ہلاکت کا کیس 9سال تک کینٹ کچہری میں جوڈیشل مجسٹریٹ اسد اللہ خان کی عدالت میں 322اتفاقیہ موت کیس کے طور پر زیرسماعت رہا،جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں مقتولہ کے شوہر جواد اشرف نے دفعہ302 لگانے کی درخواست دائر کی تھی، عدالت نے ریکارڈ کی پڑتال اور تفتیشی کے بیان کے بعد کیس میں دفعہ322کودفعہ 302میں تبدیل کرکے اسے سماعت کے لئے سیشن کورٹ بھجوا دیا تھا،جس پر سیشن جج نے اسے سماعت کے لئے ایڈیشنل سیشن جج کو بھجوادیاہے،یادرہے کہ ثنا جواد نامی خاتون کی 2010ء میں موت فضل الٰہی کلینک مصطفی آباد میں ہوئی تھی اور ملزمہ ڈاکٹر نائلہ پر الزام ہے کہ اس کے غلط آپریشن کی وجہ سے یہ موت واقع ہوئی۔

مزید : علاقائی