ہم آہنگی، رواداری اور محفوظ پنجاب'' کے عنوان سیپراجیکٹ کا افتتاح

ہم آہنگی، رواداری اور محفوظ پنجاب'' کے عنوان سیپراجیکٹ کا افتتاح

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)وزارت انسانی حقوق و اقلیتی امورو بین المذاہب ہم آہنگی اور یوتھ ڈیویلپمنٹ فاؤندیشن کے باہمی اشتراک سے گزشتہ روز ایک نجی ہوٹل میں: ہم آہنگی، رواداری اور محفوظ پنجاب'' کے عنوان سے پالیسی کو حتمی شکل دینے کیلئے ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ ایگزیکٹو ڈائریکٹریوتھ ڈیویلپمنٹ فاؤندیشن شاہد رحمت نے خطبہ استقبالیہ میں تمام شرکا ء کو بتایا کہ صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین کی سربراہی میں متعدد مشاورتی اجلاسوں کے بعد پراجیکٹ کا افتتاح کردیا گیا ہے تاہم اب پالیسی کو کابینہ سے منظوری سے قبل تمام اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت ضروری ہے تاکہ کابینہ میں جانے سے قبل تمام نکات کو حتمی مراحل سے گزارا جا سکے۔پالیسی ایکسپرٹ شہریار وڑائچ نے کہاکہ مذہبی رہنماؤں، سول سوسائٹی کے نمائندوں، نوجوانوں، طلباء، اکیڈمیہ وغیرہ سمیت متعدد اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ گہری مشاورت کے بعد مختلف تجاویز و سفارشات مرتب کی گئیں۔

جن کوبعد ازاں پالیسی کا حصہ بنانے پر اتفاق کیا گیا ہے تاکہ ایسا ماحول پیدا کیا جا سکے جدھر مختلف مذاہب اور طبقات سے تعلق رکھنے والے افراد میں بغیر کسی خوف کے ہم آہنگی پیدا کی جا سکے تاکہ وہ ملکر پاکستان کی تعمیرو ترقی میں اپنا بھرپور حصہ ڈال سکیں۔اس موقع پر صوبائی وزیر انسانی حقوق واقلیتی امو راعجاز عالم آگسٹین نے بھی تمام شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ امن، ہم آہنگی کے ماحول کوفرو غ دینا حکومت اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ ورکشاپ میں صوبائی وزیر انسانی حقوق واقلیتی امور اعجاز عالم آگسٹین، ایم پی ایز،سعدیہ سہیل، عظمیٰ کاردار،مہندر پال سنگھ،فیصل حیات جبہ، سمیرا احمد، سبین گل،خالد محمود،ڈپٹی سیکرٹری انفارمیشن سینٹرل پنجاب صائمہ کامران،چیئرمین پنجاب یوتھ کونسل حمزہ کرامت،ترجمان محمد خان مدنی وغیرہ نے شرکت کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1