آل میونسپل ورکرز اور یونائٹیڈ میونسپل ورکرزکا مشترکہ احتجاجی مظاہرہ

آل میونسپل ورکرز اور یونائٹیڈ میونسپل ورکرزکا مشترکہ احتجاجی مظاہرہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)آل میونسپل ورکرز یونین پشاور (ڈبلیو ایس ایس پی)اور یونا یئٹڈمیونسپل ورکرز یونین نے تجربہ کار ایم ایل ایس کو ترقی دینے کے بجائے نئے ایم ایل ایس بھرتی کرنے اور دیگر مطالبات کے حوالے سے پشاور پریس کلب کے سامنے مشترکہ احتجاجی مظاہرہ کیا اور ڈبلیو ایس ایس پی انتظامیہ کے خلاف شدید نعرہ بازی کی۔مظاہرے کی قیادت دونوں یونین کے بنائی گئی مشترکی عہدداران ریاض خان،بلال احمد،مختیار خان،حاجی ارشاد،شکیل ہاشم خیل اول سید اور دیگر عہدیداران نے کی اس موقع پر مقررین کا کہنا تھا کہ ڈبلیو ایس ایس پی افسران کیساتھ چارٹر آف ڈیمانڈ میں فیصلہ ہوا تھا کہ نئے ایم ایل ایس کی بھرتی نہیں ہوگی بلکہ پہلے سے موجود تجربہ کار ایم ایل ایس ملازمین کو پروموشن دی جائے گی تاہم ڈبلیو ایس ایس پی انتظامیہ اپنے وعدہ سے انحراف کر گئی جسکی نے ریاست مدینہ کے دعویداروں کو بے نقاب کر دیا۔انہوں نے کہا کہ جناج تک مسیحی برادری کے ملازمین کے ہیپا ٹائٹس ٹیسٹ نہیں ہوئے ہے جبکہ جن مسلمان ملازمین کے ٹیسٹ مثبت ائے ہے انکا علاج بھی تا حال شروع نہ ہوسکا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ نئے ایم ایل ایس کو ترقی دی دینے،فوڈالاونس اور اسلحہ لائسنس کا اجراء،کمپنی کیڈر کے ملازمین کو اینکرمنٹ دینے،سیکورٹی گارڈ کی تنخوا ہ دیگر ملازمین کے برابر کرنے، ملازمین کو صحت کارڈ دینے،ریٹا ئرمنٹ کی عمر 60سال بڑھا کر 63کرنے اور تمام ڈپوٹیشن میونسپل ملازمین اور کمپنی کیڈر ملازمین جو پانچ سال گزار چکے ہے انکو ٹی ایم اے میں واپس کیا جائے جبکہ ٹی ایم ایم اے میں ملازمین کی واپسی کی صورت میں لاکھوں روپے تنخواہ لینے والے ڈبلیو ایس ایس پی کے افسران کو فارغ کیابصورت دیگر احتجاج کا دائرہ وسیع کرینگے اور دھمکی دی کہ غیر معینہ مدت کیلئے شہر کی صفائی،سیورج،اور پانی بند کرینگے جسکی تمام تر ذمہ داری ڈبلیو ایس ایس پی حکام پر عائد ہوگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر