جندول،موسمی پودوں کو بھی پر لگ گئے،عوامی دسترس سے باہر

    جندول،موسمی پودوں کو بھی پر لگ گئے،عوامی دسترس سے باہر

  



جندول(نمائندہ پاکستان) جندول سب ڈویژن سمیت لوئر دیر میں موسمی پودوں کا خریداری بھی غریب لوگوں کی بس سے باہر خورمانی،الوچہ، مالٹہ اور سیب کا پودہ 80 روپے سے تجاوز کر کے ایک پودے کا قیمت 400 اور 450 پر پہنچ گئی ہے جب کے دیگر پوداجاتوں کی قیمتوں میں پچھلے سال کی نسبت 100 گنا زیادہ اضافہ ہوگیا ہے جس پر احکام بالا خاموش تماشائی بنے ہیں تفصلات کے مطابق جندول سب ڈویژن سمیت لوئر دیر کے دیگر علاقہ جات میں موسمی پھلوں کی پودے خریداری مقامی لوگوں کی بس سے باہر قیمتوں میں 100 فیصد اضافہ نے مقامی زمیداروں اور دیگر لوگوں کو تشویش میں مبتلا کردیا ہے مقامی لوگ اور باغات کے خوہشمندلوگوں نے ایک سال سے پودے لگانے کا انتظار کرتے کرتے پودوں کی قیمت نے انکی امیدے ختم کردی مقامی لوگوں کو پودوں کی قیمت میں اضافہ اور مقامی انتظامیہ کا خاموشی ایک سازش قرادیا انہونے میڈیا کو بتایا کہ ایک طرف حکومت اپنے قوم سے پودے لگانے کا اپیل کرتے جارہی ہے تو دوسرے طرف پودوں کی قیمت سے باخبر نہیں رہتے جو قابل افسوس ہے ایک سوال کے جواب میں مقامی لوگوں نے کہا کہ سونامی اور ملین ٹری کے نام پر ملک لوٹ ہورہاہے انہونے کہا کہ وزیر عظم کے سونامی اور بلین ٹری سکیم سے لویر دیر سمیت جندول سب ڈویژن میں ہزاروں کے تعداد میں غیرمعیاری پودے دیا جارہاہے جو لگانے کی قابل نہیں رہتے اس لئے مقامی لوگ پرئیوٹ نرسروں کی پودے خریداری مہنگا داموں پر کررہی ہے انہونے مقامی انتظامیہ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ پرایؤٹ نرسرری کو سرکاری نرخ نامے جاری کریں تکہ مقامی لوگ اسانی کے ساتھ پودوں کی مہیم میں حصہ لے سکیں

مزید : پشاورصفحہ آخر