بلاول بھٹو نیب کے بے بنیاد نوٹسز سے گھبرانے والے نہیں: مرتضی وہاب

بلاول بھٹو نیب کے بے بنیاد نوٹسز سے گھبرانے والے نہیں: مرتضی وہاب

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ حکومت کے ترجمان مشیر قانون، ماحولیات و ساحلی ترقی بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی سلیکٹیڈ حکومت جان لے بلاول بھٹو زرداری کا تعلق شہید گھرانے سے ہے وہ نیب کے بے بنیاد نوٹسز سے گھبرانے والے نہیں ہیں بلاول بھٹو آج نیب کے سامنے پیش ہونگے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز سندھ اسمبلی میڈیا کارنر پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا کہ جھوٹے اور لغو نوٹسز بھیج کر بلاول بھٹو زرداری کو خاموش نہیں کرایا جاسکتا یہ نااہل حکمرانوں کی بھول ہے یوٹرن حکومت ہر محاز پر ناکام ہوچکی ہے پچھلے 18 ماہ میں پی ٹی آئی حکومت کی وجہ سے معیشت کی تنزلی ہوئی ہے معشیت میں بگاڑ آیا ہے معاشی پالیسی کو تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے ایسی صورتحال میں ریلیف پیکج لایا گیا یہ ایسی منفرد حکومت ہے جو کہتی کچھ اور کرتی کچھ اور ہییوٹیلیٹی اسٹورز میں اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے حکومت پاکستان کے عوام کا استحصال کررہی ہے بیرسٹر مرتضی وہاب کا مزید کہنا تھا کہ حکومت وعدہ کرکے یوٹرن لے لیتی ہے بلاول بھٹو نے مارچ میں مارچ کا اعلان کیا تو ایک بار پھر نیب کا نوٹس آگیا حکومت جان لے بلاول بھٹو شہید زوالفقار علی بھٹو کے نواسے ہیں شہید بی بی کے صاحبزادے اور کروڑوں جیالوں کے محبوب قائد ہیں وہ ان جھوٹے کیسسز سے گھبراتے نہیں ہیں جھوٹے مقدمات کرکے بلاول کو روکنا سلیکٹیڈ حکمرانوں کی بھول ہے بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ کل یوٹیلٹی اسٹورزنے آٹے چینی کی قیمتیں بڑھادی ہیں یہ عوام کے ساتھ ظلم کے مترادف ہے حکمرانوں کو عوام کی زرہ برابر بھی فکر نہیں ہے وہ نشے کی طرح اپوزیشن کو دبانے میں مصروف ہے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کے چیئرمین نے جیسے ہی حکومت پر تنقید کرتے ہیں انہیں نیب کے جھوٹے نوٹسز سے خوف زدہ کرنے کی کوشش کی جاتی ہے اب عوامی مسائل پر بات کی تو جے آئی ٹی سے نوٹس آگیا ہے بلاول بھٹو آصف زرداری کے بیٹے ہیں وہ گھبرانے والے نہیں انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ میں ایک جگہ لکھاہواہے کہ جے آئی ٹی کاوکیل الزامات ثابت نہیں کرپارہا ہے فیصلے کی شق نمبر 35 میں بھی تحریر ہے بلاول بھٹو بے گناہ ہے جے آئی ٹی میں بلاول باربارپیش ہوئے جوسوالنامہ دیا گیا اس کے تحریری جواب بھی دیئے پچھلے جون میں جوابات دیئے گئے ہم بھی مطمئن ہوگئے کہ معاملہ ختم ہوگیا ہے دسمبرمیں بلاول بھٹو کو پنڈی میں جلسے سے روکنے کے لئے نوٹس بھیجا گیا انہوں نے کہا کہ پچھلے ہفتے بلاول بھٹو کے مارچ کے مہینے میں احتجاج کی کال پر ایک مرتبہ پھرطلب کیا گیا ہے انہوں نے اعلان کیا کہ چیئرمین بلاول بھٹو آج جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونگے اورسوالات کا جواب دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ کسی سرکاری وسائل نہیں دو پرائیویٹ کمپنی زرداری اور بحریہ ٹاؤں کے درمیان ہیں زرداری گروپ اور بحریہ کے درمیان 2011 میں نجی معاہدہ ہوا اس وقت بلاول بھٹو کے پاس کوئی پبلک عہدہ یا نمائندہ نہیں اور وہ تعلیم سے برطانیہ میں وابستہ تھیزرداری گروپ اور زرداری خاندان کی 50 سالہ ملکیت کا معاملہ تھا بلاول بھٹو نے 2018 میں پہلی دفعہ پبلک آفس ہولڈ کیئے بلاول پاکستان کے محبوب نمائندے اور عوام کا مقدمہ اٹھانے جارہے ہیں وفاقی حکومت ت اس بات پر بلاول سے نالاں نظر آرہے ہیں۔بلاول صاحب فیصلہ کرچکے ہیں اس حکومت سے عوام کو نجات دلائی جائے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی سیاسی جماعت اور اپنی پالیسیز پر چلتی ہے ہم مولانا صاحب کی جدوجہد کو بھی ویلکم کریں گے موجودہ حکومت نے صرف اور صرف یوٹرن لیا ہوا ہے ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کراچی کے تین بڑے اسپتال کے بارے وفاق پہلے معاملہ سیٹل کرچکا ہے مگر ٹویٹ کے شوقیں نکل پڑے اسپتال عوام کی ملکیت ہے آج بھی سندھ حکومت چلارہی ہے کل مستقبل میں بھی ہم چلائیں گے آئی جی کے معاملے پر سندھ حکومت اپنے اصولی موقف پر قائم ہے

مزید : صفحہ اول