سرکاری افسرتحفظ کیس ،سپریم کورٹ نے درخواست گزارکو ایکسی لینسی کہنے سے روک دیا

سرکاری افسرتحفظ کیس ،سپریم کورٹ نے درخواست گزارکو ایکسی لینسی کہنے سے روک ...
سرکاری افسرتحفظ کیس ،سپریم کورٹ نے درخواست گزارکو ایکسی لینسی کہنے سے روک دیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)بلوچستان سرکاری افسر تحفظ کیس میں چیف جسٹس پاکستان نے درخواست گزارکو ایکسی لینسی کہنے سے روک دیااور معاملے نمٹاتے ہوئے بلوچستان ہائیکورٹ کو ریفر کردیا۔

میڈیارپورٹس کے مطابق سپریم کورٹ میں سرکاری افسر تحفظ کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی، چیف جسٹس گلزار احمد نے کہاکہ زہری صاحب آپ کونسے جہاد پر نکلے ہیں ،درخواست گزار عبدالخالق زہری نے کہاکہ ایکسی لینسی عدالت سے تحفظ کیلئے آیاہوں ،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہمیں ایکسی لینسی نہ کہیں ۔

جسٹس سجاد علی شاہ نے درخواست گزار سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ آپ سے جناب ہر محکمہ تنگ ہے،آپ جس ادارے میں جاتے ہیں وہ رکھنے سے انکار کردیتے ہیں ۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ زہری صاحب !آپ کے پاس جو ہے اس پر قناعت کریں،درخواست گزارنے کہاکہ ایماندارملازم ہوں اس لئے مجھے برداشت نہیں کرتے ۔چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ آپ کو اپنے علاوہ سب کرپٹ نظرآتے ہیں ،آپ نے بلوچستان ہائیکورٹ میں بھی مقدمہ کررکھاہے ۔

عدالت نے کہاکہ بلوچستان ہدائیکورٹ کو ہدایت کردیتے ہیں وہ آپ کے کیس کا جلد فیصلہ کرے،عدالت نے بلوچستان ہائیکورٹ کوہدایت کیساتھ کیس نمٹا دیا۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد