خاتون جیلر ہی خطرناک قیدی کے عشق میں مبتلا، لیکن پھر پکڑے کیسے گئے؟ انتہائی حیران کن تفصیلات سامنے آ گئیں

خاتون جیلر ہی خطرناک قیدی کے عشق میں مبتلا، لیکن پھر پکڑے کیسے گئے؟ انتہائی ...
خاتون جیلر ہی خطرناک قیدی کے عشق میں مبتلا، لیکن پھر پکڑے کیسے گئے؟ انتہائی حیران کن تفصیلات سامنے آ گئیں

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں جیل کی خاتون گارڈایک خطرناک قیدی کے عشق میں مبتلا ہوخود قیدی بن گئی۔ دی مرر کے مطابق 40سالہ سٹیفنی سمتھ وائٹ نامی اس گارڈ کی ڈیوٹی برطانوی شہر ڈرہیم کے قریب واقع ہائی سکیورٹی جیل ’ایچ ایم پی فرینکلینڈ‘ میں تھی جہاں کرٹس وارن نامی ایک خطرناک گینگسٹر قید تھا۔ وارن کو منشیات کی بین الاقوامی سمگلنگ کے جرم میں 13سال قید ہوئی تھی۔ سٹیفنی اس پر دل ہار بیٹھی اور اس کے ساتھ خط و کتابت شروع کر دی اور دونوں نے جیل میں ہی جنسی تعلق قائم کرنا شروع کر دیا۔

رپورٹ کے مطابق سٹیفنی اور وارن کا معاشقہ 6ماہ تک چلا۔ دوران ڈیوٹی سٹیفنی کچن میں، لانڈری میں اور وارن کے سیل میں اس کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرتی تھی۔ اس نے اپنے جسم پر وارن کے نام کا ٹیٹو بھی بنوا لیا اور اسے فون پر اپنی برہنہ تصاویر بھی بھیجا کرتی تھی۔ ایک روز جیل کے ایک اور گارڈ نے سٹیفنی کو وارن کو ایک خط دیتے ہوئے دیکھ لیا جس پر اس کی خفیہ نگرانی شروع ہو گئی۔

جب جیل حکام کو یقین ہو گیا کہ دونوں کے درمیان کچھ چل رہا ہے تو انہوں نے سٹیفنی کو معطل کرکے اس کے خلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا جن میں انکشاف ہوا کہ اس کا وارن کے ساتھ گزشتہ 6ماہ سے تعلق چلا آ رہا ہے اور اب تک وہ 400سے زائد بار فون پر وارن سے بات کر چکی ہے۔ وہ موبائل فون اور دیگر غیرممنوعہ اشیاءبھی جیل میں لا کر وارن کو دیا کرتی تھی۔ سٹیفنی کو پولیس نے مقدمہ درج کرکے عدالت میں پیش کیا جہاں سے اب اسے 2سال قید کی سزا سنا کر جیل بھجوا دیا گیا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس