بھارت کا سابق فوجی اپنی ہی بیٹی کے ہاتھوں مارا گیا

بھارت کا سابق فوجی اپنی ہی بیٹی کے ہاتھوں مارا گیا
بھارت کا سابق فوجی اپنی ہی بیٹی کے ہاتھوں مارا گیا

  



نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں ایک سابق فوجی اپنی ہی بیٹی کے ہاتھوں موت کے گھاٹ اتر گیا۔ گلف نیوز کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ بھارتی ریاست اترپردیش کے ضلع متھورا میں واقع گاﺅں میتھاﺅلی میں پیش آیا جہاں بھارتی فوج کی جٹ رجمنٹ سے ریٹائر ہونے والے نائیک چیت رام سنگھ نامی شخص نے اپنی 38سالہ بیوی اور 17سالہ بیٹی پر پستول سے فائرنگ کر دی۔ انہیں گولیاں مارنے کے بعد اس نے پستول کا رخ اپنے 13سالہ بیٹے کی طرف کیا۔ وہ بیٹے کو گولی مارنے ہی والا تھا کہ اس کی زخمی بیٹی نے جھپٹ کر اس سے پستول چھین لی اور اسے گولیاں مار دیں۔چیت رام سنگھ کی موقع پر ہی موت واقع ہو گئی جبکہ زخمی ماں بیٹی ہسپتال میں زندگی اور موت کی کشمکش میں ہیں۔

سرکل آفیسر الوک ڈوبے کا کہنا تھا کہ ”باپ کو گولیاں مارنے والی لڑکی الہٰ آباد میں کوچنگ کلاسز لے رہی تھی اور دو دن پہلے ہی گھر واپس آئی تھی۔ اس کا چھوٹا بھائی 9ویں کلاس میں پڑھتا ہے۔ چیت رام سنگھ کو اپنی بیٹی کے ایک مقامی نوجوان کے ساتھ معاشقے پر اعتراض تھا جس پر گھر میں جھگڑا ہوا اور اس نے بیٹی کے ساتھ بیوی اور بیٹے کو بھی قتل کرنے کی کوشش کر ڈالی۔ “ رپورٹ کے مطابق مقتول کے بھائی نے پولیس میں ایک رپورٹ درج کروائی ہے جس میں اس نے بتایا ہے کہ اس کے بھائی کو اس کی بھتیجی اور اس کے بوائے فرینڈ نے مل کر قتل کیا ہے کیونکہ مقتول کو ان کے معاشقے پر اعتراض تھا۔

مزید : بین الاقوامی