جمعیت علمائے اسلام ف نے 23 فروری کو کراچی میں ہونے والا جلسہ ملتوی کر دیا ،وجہ جان کر آپ کو یقین ہی نہ آئے گا

جمعیت علمائے اسلام ف نے 23 فروری کو کراچی میں ہونے والا جلسہ ملتوی کر دیا ،وجہ ...
جمعیت علمائے اسلام ف نے 23 فروری کو کراچی میں ہونے والا جلسہ ملتوی کر دیا ،وجہ جان کر آپ کو یقین ہی نہ آئے گا

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے اسلام سندھ کے جنرل سیکرٹری مولانا راشد محمود سومرو نے کہاہے کہ حکمرانوں کاپچاس لاکھ نوکریوں کا دعویٰ دھرے کادھرے رہ گیاہے، ایک کروڑ لوگوں کو بیروزگارکیا گیا،نعرہ لگایا تھا کہ قرضہ نہیں لیں گے مگر نااہل لوگوں کا ٹولہ اب تک 5780 ارب ڈالر قرض لے چکا ہے ، تاریخ میں آج تک کسی نے اتنا قرضہ نہیں لیا،23فروری کو کو کراچی میں منعقد ہونے والا تحفظ آئین پاکستان جلسہ عام پی ایس ایل میچز کے نیشنل سٹیڈیم میں انعقاد کی وجہ سے 27 فروری کو اسلامیہ کالج نزد مزار قائد کراچی پر منعقد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اپوزیشن جماعتوں کی صوبائی رہبر کمیٹی سندھ کے اہم اجلاس کے بعد مولانا راشد محمود سومرو، مولانا شاہ اویس نورانی نے دیگر رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ23فروری کو کو کراچی میں منعقد ہونے والا تحفظ آئین پاکستان جلسہ عام پی ایس ایل میچز کے نیشنل سٹیڈیم میں انعقاد کی وجہ سے 27 فروری کو اسلامیہ کالج نزد مزار قائد کراچی پر منعقد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے،اپوزیشن کی تحریک تیسرے مرحلے میں داخل ہونے جارہی ہے، تحفظ آئین پاکستان کے نام سے تحریک ہوگی، 20 سے 23 فروری تک پی ایس ایل کی وجہ سے ہم سیاسی سرگرمی نہیں کررہے ہیں،ہم پی ایس ایل میچز کا وطن عزیز کے گرانڈز میں انعقاد کا خیرمقدم کرتے ہیں،اب جلسہ عام 23 کی بجائے 27 فروری کو اسلامیہ کالج کے برابر شاہراہ پر منعقد ہوگا۔خود کولبرل کہنے والے 126 دن دھرنے اپنے کپڑے سپریم کورٹ پر ٹانگ کر آئے، پی ٹی وی پر حملہ کیا ہم مرحلے وارجدوجہد کرکے آگے بڑھ رہے ہیں ہم الیکشن کمیشن کے سامنے اور قومی شاہراہوں پر بھی مظاہرے بھی کئے۔مولانا راشد محمود سومرو نے کہا کہ 27 فروری کو کراچی کے عوام گھروں سے باہر نکلیں تو مل کر کٹھ پتلی حکومت کو گھر بھیجیں، ہم گزشتہ کل بھی عوام کے ساتھ کھڑے تھے آنے والے کل بھی عوام کے ساتھ کھڑے ہونگے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی