9مئی جیسے واقعات دہرانے کی کوشش کی گئی تو بڑا سخت رد عمل آئے گا: محسن نقوی 

        9مئی جیسے واقعات دہرانے کی کوشش کی گئی تو بڑا سخت رد عمل آئے گا: محسن ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                            لاہور(جنرل رپورٹر)  وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی آج گرو مانگٹ روڈ گلبرگ میں سٹیٹ آف دی آرٹ میڈیسن ویئر ہاؤس کے توسیعی و اپ گریڈیشن پراجیکٹ کا افتتاح کیا۔ وزیر اعلیٰ نے میڈیکل ویئر ہاؤس کا دورہ کیا اور ادویات کو بین الاقوامی معیار کے مطابق سٹور کرنے کے نظام کا جائزہ لیا۔وزیراعلی محسن نقوی نے ادویات کی سٹوریج کے جدید نظام کا مشاہدہ کیا۔سیکرٹری صحت نے میڈیسن ویئر ہاؤس کے توسیعی و اپ گریڈیشن پراجیکٹ اور ادویات کو عالمی معیار کے مطابق سٹور کرنے کے نظام کے بارے میں بریفنگ دی۔وزیراعلی محسن نقوی نے کہا کہ ادویات کو سٹورکرنے کا جدید نظام دیکھ کر بہت خوشی ہوئی ہے۔ ادویات رکھنے کے لئے بین الاقوامی سٹینڈرڈ کو مدنظر رکھاگیا ہے۔ادویات کی محفوظ انداز میں بروقت سپلائی کے حوالے سے یہ نظام اہم کردارادا کرے گا۔ وزیراعلیٰ محسن نقوی نے سیکرٹری صحت اور انکی ٹیم کی کارکردگی کی تعریف کی اور کہا کہ شعبہ صحت کی بہتری کے لئے ہر طرح کے وسائل بروئے کا ر لا ئے گئے ہیں۔شعبہ صحت کی بہتری کے لئے حکومتی اقدامات کے خاطر خواہ نتائج برآمد ہوئے ہیں۔وزیراعلی محسن نقوی نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ اگر اب 9مئی جیسے واقعات دہرانے کی کوشش کی گئی تواسکا بڑاسخت رد عمل آئے گا۔ہم نہیں چاہتے کہ ایسے واقعات ہوں،ہماری ایسے واقعات سے نمٹنے کی بھرپور تیاری ہے۔الیکشن کمیشن کے پراسیس پراگر کوئی شکایات ہیں توشکایت کنندہ کو اپنا قانونی حق استعمال کرنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ 9مئی جیسے واقعات کا ملک متحمل نہیں ہو سکتا اور نہ ہی اس کی اجازت دیں گے۔ عوام گمراہ کرنے والوں سے بچیں۔پرامن احتجاج حق ہے،کوئی نہیں روکے گا۔9مئی کی طرح کے کام کریں گے تو اس کا بندوبست 4گناہ زیادہ ہو گا۔پنجاب کے حوالے سے اطلاعات ہیں کہ 9مئی جیسے واقعات دہرانے کے بارے میں گفتگو کی گئی ہے اور یہ گفتگو پکڑی بھی گئی ہے۔وزیراعلی محسن نقوی نے کہا کہ الیکشن خیر سے ہو چکے ہیں،سیاسی طریقے سے احتجاج حق ہے،کوئی روکے گا نہ ہمیں روکنا چاہیے۔الیکشن کے بارے میں کوئی اعتراض ہے تو الیکشن کمیشن سے رجوع کیا جائے۔میرا ووٹ ماڈل ٹاؤن کی بجائے ریواز گارڈن میں تھا،میں اس پر الیکشن کمیشن کو لکھ رہا ہوں۔نیٹ یا موبائل بند کرنا  وفاقی حکومت کا فیصلہ تھا،پولیس اور حکومت پر اعتراض ہے تو الیکشن کمیشن سے رجوع کیا جائے اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں۔وزیراعلی نے کہا کہ پاکستان کو ترقی اورعوام کی خوشحالی کیلئے مستحکم اور پائیدار حکومت ہونی چاہیے۔دعا ہے کہ ملک روز بروز ترقی کرے اور آگے بڑھتا چلا جائے۔آنے والے وزیراعلی کیلئے نئے خواہشات اور دعائیں ہیں۔سارے افسروں نے میرے ساتھ پرفارم کیا،کامیابی کا کریڈٹ ٹیم کو جاتا ہے۔بیوروکریسی نے مہینوں اور سالوں کے کام ہفتوں میں کیا ہے۔وزیراعلی نے کہا کہ نئے وئیر ہاؤس بننے سے ضائع ہونے والی ادویات کی مد میں 3سے 4ارب روپے بچ جائیں گے۔چلڈرن،میو اور دیگر ہسپتالوں میں ادویات کے سٹور ز میں آتشزدگی کے متعدد واقعات پیش آ چکے ہیں۔پنجاب 40ارب روپے کی ادویات خریدتا ہے،میڈیسن سٹور کرنے کے لئے بڑے بڑے گودام چاہئیں۔نیا وئیر ہاؤس بہت اچھا ڈیزائن کیا گیا ہے،17لاکھ40ہزار مربع فٹ جگہ ادویات سٹور کرنے کیلئے میسر ہو گی۔صوبائی وزراء_  ڈاکٹر جمال ناصر، عامر میر، سیکرٹری صحت، سیکرٹری تعمیرات و مواصلات، کمشنر لاہورڈویڑن اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔جی ا و آر میں سابق نیول وار کالج کی جگہ کمشنر لاہورڈویڑن کانیا آفس بن گیا۔وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی نے افتتاح کردیاہے۔ کمشنر لاہورڈویڑن آفس کیلئے اپر مال،جی او آر ون،بروم ہیڈ عمارت کی بحالی اورتزئین و آرائش کا پہلا مرحلہ مکمل کر لیا گیا ہے۔ وزیراعلیٰ محسن نقوی نے نئے کمشنر آفس کا معائنہ کیا اور کمشنر لاہور ڈویڑن سمیت نئے کمشنر آفس میں دیگر افسران کے دفاتر دیکھے۔ وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے کہا کہ نئے کمشنر آفس کولاہور کی بہترین اورمرکزی جگہ پر منتقل کیا گیا ہے اور عوام کو نئے کمشنر آفس آنے جانے میں سہولت ہوگی۔وزیر اعلیٰ محسن نقوی نے کہا کہ انتظامی افسران عوام کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں اور اپنے دروازے کھلے رکھیں۔کمشنر لاہور محمد علی رندھاوا نے نئے کمشنر آفس کی تزئین و آرائش کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ آفس میں مانیٹرنگ اور جدید ترین کنٹرول روم کا قیام بھی عمل میں لایا گیا ہے۔ کمشنر آفس لاہور ڈویڑن کا دفتر ایک لمبے عرصہ سے ایک کرائے کی عمارت میں تھا، جہاں پارکنگ، دفاتر کی کمی سمیت مختلف مسائل کا سامنا تھا۔انسپکٹر جنرل پولیس،ایڈیشنل چیف سیکرٹری،سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو،سی سی پی او،سیکرٹری صحت،ڈی جی والڈ سٹی اتھارٹی، ڈپٹی کمشنر اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

محسن نقوی

مزید :

صفحہ اول -