دھاندلی، متعدد امیدواروں کا لاہورہائیکورٹ ملتان بینچ سے رجوع

  دھاندلی، متعدد امیدواروں کا لاہورہائیکورٹ ملتان بینچ سے رجوع

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

  ملتان(خصوصی رپورٹر)الیکشن 2024، پی ٹی آئی کے ناکام ٹھہرائے گئے امیدواران نے ملتان ہائیکورٹ ملتان بنچ سے رجوع کر لیا ہے پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار این اے 186 ڈی جی خان مہر سجاد چھینہ،پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار پی پی 290 ڈی جی خان سردار محی الدین کھوسہ نے پی پی291  ڈی جی خان سے فہیم سعید چنگوانی،این اے 184 ڈی جی خا(بقیہ نمبر22صفحہ7پر)

ن سے پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار علی محمد کھلول،پی پی 287 سیپی ٹی آئی کے آزاد امیدوار اخلاق احمد بڈانی،پی پی 286 پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار فرحت عباس پی پی 269 سے پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار اقبال خان پتافی ایڈووکیٹ  پی پی 268 پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار جام محمد یونس ایڈووکیٹ ڈی جی خان سے پی ٹی آئی کے آزاد امیدوار ملک ثاقب اقبال ایڈووکیٹ نے سوموار کے روز لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ سے رجوع کیا جہاں رٹ درخواست دائر کر دی گئیں جن کی سماعت کے بعد فیصلے محفوظ کر لئے گئے ہیں۔پی پی 219 سے  ڈاکٹر اختر ملک نے بھی لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ سے رجوع کرتے ہوئے درخواست دائر کی جس پر ایڈووکیٹ ملک الطاف راں نے دوران سماعت دلائل دیتے ہوئے کہا کہ  واصف مظہر راں کی جیت پر فارم 47 بالکل قانونی طریقہ سے جاری کیا گیا ہے،  ڈاکٹر اختر ملک کے حلقے میں کنسولیڈیشن کی گئی ہے جس پر انکے دستخط موجود ہیں، واصف مظہر راں اور ڈاکٹر اختر ملک کیس میں فارم 45 چیک کروا کر دستخط کئے گئے ہیں،  پی پی 219 سے ہارنے والے ن لیگ کے امیدوار ڈاکٹر اختر ملک کی پٹیشن خارج کی جائے، ادھر الیکشن کمیشن کے وکیل مظفر حسین نے  عدالت عالیہ میں دلائل پیش کرتے ہوئے کہا جب الیکشن کمیشن کے پاس داد رسی کا راستہ موجود ہے تو ہائیکورٹ سے رجوع کیا گیا،  ہائیکورٹ میں پٹیشن ناقابل سماعت ہے، آر اوز نے رزلٹ جاری کرنے کا قانونی طریقہ اختیار کیا ہے امیدواروں کی پٹیشن خارج کی جائیں۔